مضامین

آبروریزی وقتل انسانی المیہ

معصوم آصفہ کی آبروریزی وقتل کوانسانی المیہ قراردیتے ہوئے مقامی حقوق البشرفورم وائس آف وکٹمزنے خبردارکیاہے کہ سنگین جرائم کولسانی یافرقہ وارانہ رنگت دینامجرموں کی طرفداری کے مترادف ہے ۔وی اؤوی نے کامران یوسف کی گرفتاری کوبلاجوازقراردیتے ہوئے نوجوان فوٹوجرنلسٹ کے حق میں ایمنسٹی انٹرنیشنل کی شروع کردہ آن لائن مہم کی حمایت کااعلان کیاہے ۔ ایک بیان میں وؤئس آف وکٹمزکے ایگزیکٹوڈائریکٹر عبدالقدیر نےاسبات پرسخت تشویش ظاہرکی ہے کہ ہیرانگرجموں میں ایک آٹھ سالہ معصوم بچی آصفہ بانوکی آبروریزی کے بعدقتل جیسے ایک سنگین نوعیت کے جُرم کوکچھ لوگ لسانی اورفرقہ وارانہ رنگت دینے کی افسوسناک کوشش کررہے ہیں اورایک بڑی سیاسی جماعت ایسے شرانگیوں کی پیٹھ تھپتھپارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ آصفہ کیس کے کلیدی ملزم دیپک کے اعتراف جرم کئے جانے کے بعدجس اندازمیں اس انسانی المیہ کوسیاسی ،لسانی اورفرقہ وارانہ رنگت دینے کی کوشش کی جارہی ہے ،اُسے یہ اندیشہ ظاہرہوتاہے کہ اس سنگین جرم کے درپردہ خطرناک محرکات اورہاتھ ہیں ۔ عبدالقدیر نے کہاکہ سانحہ ہیرانگرکی تحقیقات سی بی آئی کوسونپے جانے کی مانگ کوناقابل قبول قراردیتے ہوئے اسبات پرزوردیاکہ ریاستی پولیس کی کرائم برانچ کواب بلاتاخیرآصفہ آبروریزی وقتل میں ملوث اورشامل رہے سبھی ملزمان کوبے نقاب کرتے ہوئے اُن کیخلاف عدالت میں فرد جرم عائدکردیناچاہئے تاکہ مہلوک بچی کے غمزدہ لواحقین کوانصاف ملے نیز اس معاملے کوسیاسی وعلاقائی نیز لسانی وفرقہ وارانہ رنگت دینے کیلئے کوشاں عناصر کامنہ بندہوسکے ۔ وؤئس آف وکٹمزکے ایگزیکٹوڈائرنے خبردارکیا کہ سنگین جرائم کولسانی یافرقہ وارانہ رنگت دینامجرموں کی طرفداری کے مترادف ہےاوراس طرح کی نہج اوررُجحانات سماج کوتقسیم درتقسیم کرنے کاموجب بننے کیساتھ ساتھ ریاست میں پہلے ہی سے ابترحالات کومزیدبگاڑنے کاموجب بھی بن سکتے ہیں ۔انہوں نے کامران یوسف کی گرفتاری کوبلاجوازقراردیتے ہوئے نوجوان فوٹوجرنلسٹ کے حق میں ایمنسٹی انٹرنیشنل کی شروع کردہ آن لائن مہم کی حمایت کااعلان کیا۔عبدالقدیر نے کہاکہ کامران یوسف کی پیشہ وارانہ خدمات پرسوال اُٹھائے جانے کوافسوسناک قراردیتے ہوئے یہ واضح کیاکہ صحافتی ادارے اوراسے وابستہ افرادکیلئے عوامی نوعیت کی زیادتیوں کواُجاگرکرنااولین پیشہ وارانہ ذمہ داری ہوتی ہے ،اوروادی سے تعلق رکھنے والے صحافی بشمول فوٹواورویڈیوجرنلسٹ اس معاملے میں ناقابل فراموش رول نبھاتے آئے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ نجی نیوزچینلوں نے صحافت کی مٹی پلیدکرنے میں کوئی کسرباقی نہیں چھوڑی ہے لیکن کشمیر کی صحافتی برادری اس ماحول میں بھی اپنے عظیم پیشے کی عظمت،غیرجانداریت اورعزت بچانے کیلئے کوشاں ہیں ۔