مضامین

وادی بھر میں جمعتہ الوداع کے عظیم الشان اجتماعات/ یوم القدس اوریوم کشمیرکے حق میں ریلیاں اورجلسے جلوس برآمد

ماہ مبارک کے آخری جمعہ کے موقعہ پرعرب وعجم کی طرح ہی منقسم ریاست جموں وکشمیرکے پانچوں خطوں بشمول کشمیر،جموں ،لداخ ،پاکستانی زیرانتظام کشمیراورگلگت وبلتستان میں بھی رُوح پروراورعظیم الشان اجتماعات منعقد ہوئے ،جن میں لاکھوں فرزندان توحیداورہزاروں کی تعدادمیں مسلم خواتین اورلڑکیوں نے شرکت کرکے بارگاہ الٰہی میں اپنے سرجھکائے۔اس دوران بڑی جامع مساجد،خانقاہوں،امام باڈوں،زیارتگاہوں اوردیگرمسلم عبادتگاہوں میں جگہ کی کمی کے باعث ہزاروں کی تعدادمیں لوگوں نے سڑکوں پرصفیں باندھ کرجمعتہ الوداع کی نمازباجماعت اداکرنے کاشرف پایا۔ ممکنہ طورپرعیدالفطرکی تقریب سعید15جون بروزجمعتہ المبار ک کومنائے جانے کے پیش نظراسی جمعہ کوبطورجمعتہ الوداع منایاگیا۔وادی کشمیرمیں اس مقدس ومتبرک دن کے حوالے سے بڑے بڑے اوروح پروراجتماعات منعقد کئے گئے جبکہ شہرسری نگرمیں جمعتہ الوداع کی مناسبت سے جھیل ڈل کے کنارے پرتاریخی درگاہ حضرتبل اورشہرخاص میں واقع مرکزی جامع مسجد سری نگرمیں عظیم الشان اجتماعات منعقد ہوئے۔گرمائی راجدھانی میں سری نگرکی ان دونوں تاریخی مسلم عبادتگاہوں میں وادی کے اطراف واکناف سے آئے لاکھوں فرزندان توحیداورہزاروں پردہ نشین مسلم خواتین نے جمعتہ الوداع کے بابرکت اجتماعات میں شرکت کی۔درگاہ حضرتبل اورمرکزی جامع مسجدمیں نمازجمعتہ الوداع میں شامل ہونے کیلئے آئے ہزاروں لوگوں کودونوں عبادتگاہوں کے اندرجگہ نہیں مل سکی ،جسکے بعدحضرتبل اورنوہٹہ کے گردونواح میں ہزاروں کی تعدادمیں لوگوں نے سڑکوں اورگلی کوچوں میں ہی صفیں باندھ لیں۔اس دوران پورے حضرتبل اورشہرخاص میں درودواذکارکی گونج نے فضاء کومعطرکردیا۔ درگاہ حضرتبل میں نمازجمعتہ الوداع کی پیشوائی درگاہ کے امام وخطیب نے کی۔درگاہ میں موجودلوگوں نے بتایاکہ شدیدگرمی کے باوجودلگ بھگ ایک لاکھ فرزندان توحیدنے جمعتہ الوداع کے عظیم الشان اجتماع میں شرکت کی ،اوراس دوران پورے حضرتبل میں درودواذکارکی گونج سے فضاء معطرہوئی ۔اس موقعہ پرحضرتبل علاقہ میں انتظامیہ کی جانب سے ٹریفک جام کی صورتحال سے بچنے اورنقب زنوں کی سرگرمیوں کوناکام بنانے کیلئے بڑی تعدادمیں پولیس اورفورسزاہلکاروں کی ٹیمیں سبھی نکڑوں اورچوراہوں پرتعینات رکھاگیاتھا ۔ادھر مرکزی جامع مسجدسری نگرمیں میرواعظ کشمیراورسینئرمزاحمتی قائدڈاکٹرعمرفاروق نے جمعتہ الوداع اجتماع کی صدار ت کرتے ہوئے اس دن کے حوالے سے خطاب کیاجبکہ میرواعظ عمرفاروق نے اپنے خطاب کے دوران کشمیرکی موجودہ صورتحال ،مسئلہ کشمیر،کشمیریوں کی جدوجہداوربھارت سرکارکی کشمیرپالیسی کاتفصیل کیساتھ ذکربھی کیا۔مرکزی جامع مسجدمیں نمازجمعتہ الوداع کی پیشوائی امام حئی مولاناسیداحمدسعیدنے انجام دی ۔ایک لاکھ سے زیادہ فرزندان توحیداورہزاروں کی تعدادمیں پردہ نشین خواتین کی آمدکے پیش نظرمرکزی جامع مسجدمیں جگہ کی کمی کامسئلہ درپیش ہوا،اوریہاں جامع مسجدکے گردونواح میں خیمے بھی نصب کئے گئے تھے لیکن اسکے باجودہزاروں کی تعدادمیں لوگوں نے تپتی دھوپ کی پرواہ کئے بغیرکھلے آسمان تلے باجماعت نمازجمعتہ الوداع ا داکی ۔ نمازجمعتہ الوداع کے بعدجامع مسجدسے ایک جلوس برآمدہوا،جس میں شامل لوگوں نے اسلام وآزادی کے علاوہ فلسطینیوں کے حق میں اوربھارت ،امریکہ واسرائیل کیخلاف نعرے بلندکئے ۔اس دوران آستانہ عالیہ پیردستگیرصاحب واقع خانیار،کوہ ماراں کے دامن میں واقع آستانہ عالیہ سلطان العارفین مخدوم صاحبؒ ،آثارشریف شہری کلاش پورہ،جناب صاحب صورہ ،خانقاہ معلی،آستانہ عالیہ سیدیعقوب صاحبؒ واقع سونہ واراورآستانہ عالیہ بتہ مالوصاحبؒ سمیت سری نگرشہرکی سبھی جامع مساجدوغیرہ میں جمعتہ الوداع کے موقعہ پرعظیم الشان اجتماعات منعقد ہوئے۔اس دوران باغوان پورہ لالبازار،آبی گذربنڈاورشہرمیں دیگرکئی مقامات پربھی یوم القدس اوریوم کشمیرکے حوالے سے ریلیاں اورجلوس برآمدہوئے جن میں شامل لوگوں نے قبلہ اول کی بازیابی اورکشمیریوں وفلسطینیوں کے حق میں نعرے بازی کی ۔اس موقعہ پرتاریخی جامع مسجدسری نگراوردرگاہ حضرتبل سمیت درجنوں جامع مساجداورزیارتگاہوں میں جمعتہ الوداع کی مناسبت سے مشترکہ مزاحمتی قیادت کی قراردادپڑھ کرسنائی گئی اوراس کے حق میں لوگوں کی تائیدبھی لی گئی ۔اُدھرشمال ،جنوبی اوروسطی کشمیرکے سبھی 9اضلاع بشمول بارہمولہ ،کپوارہ ،بانڈی پورہ ،اسلام آباد،کولگام ،شوپیان ،پلوامہ ،بڈگام اورگاندربل کے سبھی قصبوں اورعلاقوں میں واقع جامع مساجد،خانقاہوں ،زیارتگاہوں اورامام باڈوں وغیرہ میں بھی جمعتہ الوداع کے موقعہ پرعظیم الشان اورروح پروراجتماعات کاانعقادہوا،اوران میں لاکھوں کی تعدادمیں لوگوں نے خشووخضوکیساتھ شرکت کی ۔نمازجمعتہ الوداع کے موقعہ پرشمال وجنوب کی مساجدمیں بھی مزاحمتی قیادت کی جانب سے پیش کردہ قراردادپڑھ کرسنائی گئی اورلوگوں نے اسکی تائیدکی ۔درگاہ حضرتبل اورمرکزی جامع مسجدسمیت وادی بھرکی مساجداورخانقاہوں میں آئے لاکھوں فرزندان توحیدنے باجماعت نمازجمعتہ الوداع اداکرنے کے بعد اللہ تبار ک و تعالیٰ کے حضور انتہائی عاجزی و انکساری کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسلام کی سربلندی ، ملت کے جملہ مسائل کے حل کیلئے دعائیں مانگی۔اس دوران یوم القدس و یوم کشمیرکے حوالے سے جموں و کشمیراتحا د المسلمین کے اہتمام سے وادی کے متعدد علاقوں میں عظیم الشان قدس ریلیوں کا اہتمام کیا گیا جن میں لوگوں نے بھر پور شرکت کرتے ہوئے اسرائیل،بھارت اور امریکہ کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے اورقبلہ اول کیساتھ گہری محبت وعقیدت کا اظہار کیا۔اس سلسلے میں نماز جمعہ کے فوراً بعدتنظیم کے نائب صدر آغا سید یوسف کی قیادت میں سجاد آباد چھتہ بل سے قدس ریلی برآمد ہوئی جہاں لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔مظاہرین نے عالمی استکبار کے خلاف نعرے بلند کئے اور امریکہ مردہ باد،اسرائیل مردہ باد، القدس لنا جیسے فلک شگاف نعرے لگائے۔