خبریں

ہندوپاک سرحد پر جنگ جیسی صورتحال

ہندوپاک سرحد پر جنگ جیسی صورتحال

گذشتہ دنوں سےلگاتار ہندوپاک سرحد پر کشیدگی بنی ہوئی اور آر پار کی گولی باری سے دونوں طرف سے نہ صرف مالی نقصان ہو رہا ہے بلکہ انسانی جانوں کا زیاں بھی ہو رہا ہے۔ تازہ صورتحال یہ ہے کہ حدمتارکہ اوربین الاقوامی سرحدپردھماکہ خیزصورتحال کے بیچ آرپارکچھ خواتین اور2بی ایس ایف اہلکاروں سمیت10افرادہلاک اور درجنوںعام شہری زخمی ہوگئے ۔جمعرات کے بعدجمعہ کی صبح ہندوپاک افواج نے 8سیکڑوں میں ایک دوسری کی چوکیوں اورسرحدی علاقوں کونشانہ بناتے ہوئے شدیدنوعیت کی گولہ باری اورمارٹرشلنگ کی ،جسکے نتیجے میں ایک بی ایس ایف اہلکارکے علاوہ آرپار5عام شہری لقمہ اجل بن گئے جبکہ10طالبات سمیت 25شہری شلنگ کی زدمیں آکرزخمی ہوگئے۔
دفاعی ترجمان کے مطابق پاکستانی فوج اوررینجرزنے آرایس پورہ،ارینہ ،رام گڑھ اورہیرانگرسیکٹروں میں بلااشتعال گولہ باری اورشلنگ کی ،جسکے نتیجے میں ایک بی ایس ایف اہلکاراور تین عام شہری ازجان ہوئے اوردیگر14شہری زخمی ہوئے ۔
اُدھرپاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق بھارت کی فوج اورنیم فوجی دستوں نے ہرپال، سجیت گڑھ، باجڑہ گھڑھی اور سجیت گڑھ سیکٹر پر بلااشتعال فائرنگ اورگولہ باری کی،جسکی زدمیں آکر2عام شہری ازجان اور10نوعمرطالبات سمیت11عام شہری زخمی ہوگئے ۔
دریں اثناء پچھلےدنوں سے لائن آف کنٹرول اوربین الااقومی سرحدپرجاری جنگ جیسی صورتحال کے باعث آرپارسرحدی علاقوں میں افراتفری پائی جاتی ہے ۔بڑی تعدادمیں لوگ نقل مکانی کرچکے ہیں جبکہ تمام تعلیمی ادارے اورمعمول کی عوامی سرگرمیاں ٹھپ پڑی ہیں ۔
جموں کے آر ایس پورہ وارینہ ،ضلع سانبہ کے رام گڑھ اورضلع کٹھوعہ کے ہیرانگرسیکٹر میں بین الاقوامی سرحداورلائن آف کنٹرول پر جنگ جیسی صورتحال برقرارہے۔جموں میں دفاعی ذرائع کا کہنا ہےکہ جمعہ کی صبح پاکستانی فوج کی ہلاکت خیز فائرنگ اور ماٹر شلنگ کے نتیجے میں تین شہری اورایک بی ایس ایف اہلکار ہلاک اور متعددشہری زخمی ہوئے ۔انہوں نے کہاکہ صوبہ جموں کے آر ایس پورہ سیکٹر میں بین الاقوامی سرحد پر تین شہری ازجان اور کئی دیگر زخمی ہوئے ۔
یاد رہے جمعرات کو ہند پاک افواج کے درمیان ہوئی آتشی گولہ باری میں آر پار تی3 شہری اور بی ایس ایف کا ہیڈ کانسٹیبل ہلاک ہوگیاتھا جبکہ ایک درجن کے قریب شہری زخمی ہوئے تھے۔
اُدھرپاکستان کا کہنا تھا دو خواتین بھارتی فوج کی فائرنگ اور ماٹر شلنگ کے نتیجے میں ازجان اور پانچ دیگر شہری زخمی ہوئے۔بھارت کا بھی کہنا ہے کہ پاکستانی فوج کی فائرنگ اور ماٹر شلنگ سے 14سالہ بچی اور بی ایس ایف کا ہیڈ کانسٹیبل ازجان ہوا ۔جمعہ کے روزجموں میں دفاعی ترجمان نے بتایاکہ آر ایس پورہ میں جمعہ کی صبح 6بجکر 40منٹ کے قریب ہند پاک افواج کے درمیان آتشی گولہ باری کا تبادلہ ہوا ۔دفاعی ترجمان کے مطابق جموں کے آر ایس پورہ سیکٹر میں بین الاقوامی سرحد پر پاکستانی فوجیوں کی طرف سے کی جانے والی فائرنگ میں 3 شہریوں کی موت ہوگئی، اور7 دیگر زخمی ہوگئے۔دفاعی ذرائع کے مطابق پاکستان نے جموں کے آر ایس پورہ سیکٹرمیں ارنیا علاقے میں بھی فائرنگ کی اور سانبہ کے رام گڑھ سیکٹر نیز کٹھوعہ کے ہری نگر سیکٹر میں بھی کئی گاؤں کو نشانہ بنایا گیا۔انہوں نے بتایا کہ آر ایس پورہ میں فائرنگ کا تبادلہ جاری ہے،جسکی وجہ سے یہاں صورتحال دھماکہ خیز بنی ہوئی ہے ۔ اس دوران دفاعی ترجمان نے بتایا کہ بھارتی فوج جنگ بندی کی خلاف ورزی کا بھر پور جواب دے رہی ہے ۔
یا د رہے کہ بی ایس ایف کے ڈائریکٹر جنرل کے کے شرما نے جموں میں کہا ہےکہ سرحد پر جنگ جیسی صورتحال ہے اور لائن آف کنٹرول پر کمانڈروں کو پاکستان کی فائرنگ کا سخت جواب دینے کو کہا گیا ہے۔ ادھر میڈیا رپورٹس کے مطابق سانبہ سیکٹر میں پاکستانی فائرنگ سے 173بٹالین بی ایس ایف سے وابستہ بی ایس ایف اہلکار جگ پال سنگھ ہلاک ہوا ہے ۔دفاعی ترجمان نے بتایاکہ جمعہ کوبعددوپہرتک ایک بی ایس ایف اہلکاراورتین شہریوں کے ازجان اورمزید14عام شہریوں کے فائرنگ وشلنگ کی زدمیں آکرزخمی ہوجانے کی اطلاعات ملیں۔اُدھرپاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایاگیاکہ بھارتی فوج کی جانب سے ورکنگ باؤنڈری پر جمعہ کومسلسل دوسرے روز بھی بلااشتعال فائرنگ اورگولہ باری کا سلسلہ جاری رہا جس کے نتیجے میں مزید 2 پاکستانی شہری ازجان ہوگئے۔بیان کے مطابق بھارتی فورسز نے پھر ورکنگ باؤنڈری کے ہرپال، سجیت گڑھ، باجڑہ گھڑھی اور سجیت گڑھ سیکٹر پر بلااشتعال فائرنگ اورگولہ باری کی . جس کے نتیجے میں2 شہری ازجان جبکہ ایک زخمی ہو گیا۔لاشوں اورزخمیوں کو سی ایم ایچ منتقل کردیاگیا ۔بیان کے مطابق پاکستان رینجرز کی جانب سے دشمن کو منہ توڑ جواب دیا گیا۔جس کے بعد دشمن کی توپیں خاموش ہوگئیں۔پاکستانی فوج کے مطابق بھارتی فوج نے لائن آف کنٹرول کے چاہی سماہنی سیکٹر میں فائر بندی کی خلاف ورزی کی ۔ جس کے نتیجے میں 10 طالبات زخمی ہوگئیں۔بیان کے مطابق بھارتی اشتعال انگیزی کا شکار بننے والی طالبات میں سے پانچویں جماعت کی ایک طالبہ چمن کی حالت زیادہ تشویشناک ہے اور اسے شدید زخمی حالت میں ڈی ایچ کیو اسپتال بھمبرمنتقل کیا گیا ہے۔