سرورق مضمون کالم کی خبریں

خاندانی راج قبول نہیں

14 Jul 2018 کو شائع کیا گیا

محبوبہ مفتی نے دہلی سے واپس آکر سرگرمیاں شروع کی ہیں ۔ اس حوالے سے بتایا جارہاہے کہ انہوں نے اپنی رہائش گاہ پر پی ڈی پی کے کور گروپ کی میٹنگ بلائی۔ میٹنگ میں کئی اعلیٰ عہدیداروں نے شرکت کی۔ جانکار حلقوں سے معلوم ہوا ہے کہ جنرل سیکریٹری نظام الدین بٹ اور ترجمان رفیع میر کے علاوہ عبدالررحمان ویری اور محبوب بیگ اس میٹنگ میں موجود تھے۔ میٹنگ کو بہت ہی اہم قرار دیا جارہاہے ۔ میٹنگ میں پارٹی کے مزیدپڑھیں

پردے کے پیچھے کھچڑی پک رہی ہے ؟

07 Jul 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ
بدھ وار کو مرکزی وزیرداخلہ اور قومی سیکورٹی کے مشیر سرینگر پہنچ گئے ۔ائر پورٹ پرانہیں گورنر کے مشیروں کی طرف سے استقبال کیا گیا ۔ اس موقعے پر بڈگام کی ڈپٹی کمشنر کے علاوہ کئی دوسرے حکام بھی وہاں موجود تھے۔ ان کا یہ دوروزہ دورہ بڑا ہی اہم سمجھا جارہاہے ۔ ریاست پر گورنر راج نافذ ہونے کے بعد مرکزی وزیر داخلہ کا یہ پہلا کشمیر دورہ ہے ۔ انہوں نے سرینگر پہنچتے ہی گورنر کے ساتھ ملاقات کی اور مزیدپڑھیں

رام مادھو سجاد لون ملاقات/ کیا کوئی نیا کھیل کھیلا جارہاہے ؟

02 Jul 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ
بدھوار کو بی جے پی کے قومی جنرل سیکریٹری رام مادھواچانک سرینگر پہنچ گئے۔ سرینگر میں انہوں نے پہلے ریاست کے گورنر این این ووہرا سے ملاقات کی ۔ اس کے بعد انہوں نے پیوپلز کانفرنس کے چیرمین اور سابق وزیر سجاد غنی لون سے مبینہ طور ایک اہم میٹنگ کی۔ اس میٹنگ کے حوالے سے کئی طرح کی افواہیں گشت کررہی ہیں۔ کچھ حلقوں کا کہنا ہے کہ میٹنگ میں بی جے پی کی قیادت میں نئی سرکار بنانے کے معاملے پر مزیدپڑھیں

محبوبہ مفتی کا دورِ اقتدار کشمیری عوام کےتئیں ظلم و ستم

23 Jun 2018 کو شائع کیا گیا

یوسف ندیم
محبوبہ مفتی کی سرکار آتے ہی کشمیری عوام کو روز نئی مصیبتوں کا منہ دیکھنا پڑا۔ پوری مدت کے دوران ایک کے بعد ایک نئی مصیبت کا سامنا رہا۔ محبوبہ مفتی کے دور اقتدار کے دوران حالات خراب رہے۔ نہ امن ملا اور نہ چین کا سایہ ہی نصیب ہوا۔ حالانکہ پی ڈی پی۔ بی جے پی مخلوط سرکار کا دورانیہ افراتفر کا ثابت ہوا۔ اب جبکہ ریاست کے سابق وزیراعلیٰ اور پی ڈی پی کے بانی مرحوم مفتی محمد سعید کی طرح محبوبہ مفتی کو بھی اس بات کا مزیدپڑھیں

پولیس اہلکاروں کی ہلاکت پر کہرام

19 Jun 2018 کو شائع کیا گیا

رواں مہینے کی۱۲ تاریخ یعنی منگلوار کو صبح سویرے پلوامہ سے اطلاع ملی کہ نامعلوم بندوق برداروں نے دوپولیس اہلکاروں کو ہلاک اور ایک کو شدید زخمی کردیا۔ پلوامہ کے مضافات میں تکیہ واگم میں واقع عدالت پر بندوق برداروں نے اچانک حملہ کیا اور ڈیوٹی پر تعینات تین پولیس اہلکاروں پر شدید فائرنگ کی ۔ ان میں سے دو موقعے پر ہی ہلاک اور ان کا ایک ساتھی شدید زخمی ہوا۔ اس واقعے نے پورے علاقے کو سخت صدمے سے دوچار کیا ۔ عید سے پہلے ان ہلاکتوں پر سخت رنج وغم کا اظہار کیا گیا ۔ اس طرح سے مزیدپڑھیں

بات سے بات نہ بنی ، فیصلے دہلی میں ہونگے؟

10 Jun 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ
گزشتہ روز8 جون یعنی جمعرات کو وزیراعلیٰ نے سرینگر میں افطار پارٹی کا اہتمام کیا تھا۔ اس افطار پارٹی میں کئی فوجی کمانڈروں،پولیس آفیسروں ، سیول انتظامیہ کے اہلکاروں اور میڈیا نمائندوں کے علاوہ مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے دہلی سے آکر شرکت کی ۔ افطار پارٹی سے پہلے یوتھ سپورٹس جلسے کا اہتمام کیا گیا تھا ۔ جلسے میں چھ ہزار کے لگ بھگ جوانوں کی شرکت کی اطلاع ہے ۔ ا س موقعے پر ریاست کے کئی نامور کھلاڑیوں مزیدپڑھیں

سیز فائر بھی ہلاکتیں بھی جاری / بات چیت پر محتاط ردعمل

03 Jun 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ//
مشترکہ حریت کانفرنس کا کہنا ہے کہ بات چیت شروع کرنے سے پہلے مرکزی سرکار اپنا طرز عمل واضح کرے ۔ یہ ردعمل اس وقت سامنے آیا جب مرکزی وزیرداخلہ کی طرف سے بات چیت کی پیش کش کی گئی ۔ اس پر مشورہ کرنے میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک حیدر پورہ سید علی گیلانی کی رہائش گاہ پر گئے ۔ اس میٹنگ کے بعد جو بیان جاری کیا گیا اس میں اشارہ دیا گیا کہ حریت بات چیت میں شامل ہونے کے لئے تیار ہے ۔ البتہ بات چیت مزیدپڑھیں

محبوبہ مفتی کا درابو کے خلاف سخت اقدام/ حکومت کے بعدکیا پارٹی سے بھی رخصتی ہوگی ؟

17 Mar 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ
رواں ماہ کی 12 تاریخ یعنی سوموار کو اس وقت وزیراعلیٰ نے دبنگ قدم اٹھایا جب گورنر کو خط لکھ کر ڈاکٹر حسیب درابو کو وزارتی کونسل سے رخصت کرنے کی سفارش کی گئی۔ گورنر سفارش قبول کرتے ہوئے اسی وقت اس اقدام کی توسیع کی ۔ اس طرح سے مالیات کے وزیر درابو کو بغیر کسی ہچکچاہٹ کے مزیدپڑھیں

شام لرز اٹھا ، شہری آبادی پر بمباری

03 Mar 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ
شام میں ایک بار پھر شہری آبادی کو تختہ مشق بنایا گیا ۔ بمباری کرکے اب تک 600لوگوں کو مارا گیا جن میں نصف سے زیادہ معصوم بچے شامل ہیں ۔ ان ہلاکتوں کے خلاف مسلمان سراپا احتجاج ہیں ۔ عالمی اداروں کی معنی خیز خاموشی پر سب لوگ حیران ہیں ۔ سوشل میڈیا پر اس بمباری کے خلاف سخت احتجاج کیا جارہاہے ۔ یہاں 2011 میں پہلی بار لوگوں نے حکمران بشار الاسد کی ڈکٹیٹرشپ کے خلاف سخت احتجاج کیا ۔ خبروں کے مطابق باغیوں نے بڑے پیمانے پر پیش رفت کرکے دمشق کو اپنی تحویل میں لینے کی کوشش کی مزیدپڑھیں

کٹھوعہ عصمت ریزی اور قتل کیس کاسیاسی رخ / این سی کے بعدحریت بھی میدان میں

24 Feb 2018 کو شائع کیا گیا

ڈیسک رپورٹ
متحدہ حریت کانفرنس نے جمعرات کو سرینگر میں علامتی دھرنا دے کر الزام لگایا کہ جموں میں مسلمانوں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔ حریت لیڈر سید علی گیلانی نے دھمکی دی ہے کہ مسلمانوں کو کسی قسم کا نقصان پہنچایا گیا تو خاموش نہیں رہاجائے گا ۔ دھرنے سے پہلے یاسین مزیدپڑھیں