اداریہ کالم کی خبریں

کیا درابو کوسیاسی کیرئیر برقرار رہے گا؟

17 Mar 2018 کو شائع کیا گیا

گذشتہ دنوں ریاستی وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے ڈاکٹر حسیب درابو سے خزانہ کی وزارت واپس لے کر سید الطاف بخاری کو تفویض کیا۔ حسیب درابو کو ایک اہم عہدے سے ہٹا یا گیا اور فی الوقت درابو اب محض ایک اسمبلی ممبر رہ گئے ہیں۔ یاد رہے درابو کو اس وقت کابینہ سے رخصت کیا گیا جب انہوں نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے ایک متضاد بیان دیا ۔ اُس بیان میں درابو نے کہا کہ مسئلہ کشمیر سرے سے کوئی سیاسی مسئلہ نہیں ہے ۔ حالانکہ بیان کے بعد ردعمل کے طور پر وادی میں ہلچل مزیدپڑھیں

کیا انسانیت دم توڑ چکی ہے؟

24 Feb 2018 کو شائع کیا گیا

کٹھوعہ میں معصوم بچی کے ساتھ آبروریزی و قتل کا واقعہ رونما ہونا بظاہر ایک دلدوز واقعہ ہے اور اس سانحہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ مگر بد قسمتی سے اس واقعے کو فرقہ واریت اور سیاست کا رنگ دیا جارہاہے ۔ کئی ایک لوگ آبرو ریزی اور قتل میں ملوث افراد کے حق میں سیاسی فائدہ اٹھانے کےلئے ریلیاں نکال رہے ہیں ، جس سے ہر کوئی ذی حس انسان یہ کہنے کےلئے مجبور ہو جاتا ہے کہ کیا انسانیت دم توڑ چکی ہے؟ جن لوگوں کو پھانسی کے پھندے پر بٹھانا چاہیے اُن کے حق میں ریلی نکلنا کوئی دانشمندی نہیں بلکہ صاف طور پر عیاں ہو جاتا ہے کہ ایسے مزیدپڑھیں

اور یوم جمہوریہ منایا گیا

27 Jan 2018 کو شائع کیا گیا

وادی میں سخت حفاظتی بندوبست کے بیچ یوم جمہوریہ منایا گیا۔ یہاں پہلے ہی ہائی الرٹ کیا گیا تھا ۔ جنگجووں کی طرف سے ممکنہ کاروائی کو روکنے کے لئے سیکورٹی کے سخت انتظامات کے بیچ وادی میں یوم جمہوریہ کی تقریبات منائیں گئیں، حالانکہ جنگجووں نے لوگوں کو ان تقریبات میں شامل نہ ہونے کی اپیل کی تھی ۔ خاص طور سے طلبہ کو ایسی کسی تقریب میں شریک ہونے پر دھمکی دی تھی ۔ اس وجہ سے حالات انتہائی کشیدہ رہے، حالانکہ یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ وادی میں نہ صرف 15 اگست اور26 جنوری کی تقریبات لوگوں کےلئے عذاب کے دن ہوتے ہیں بلکہ مختلف مزیدپڑھیں

ہندوپاک سرحدوں پر تنائو

21 Jan 2018 کو شائع کیا گیا

گذشتہ دنوں سے لگاتار ہندپاک سرحدوں پر تنائو بنا ہوا ہے، آئے روز خبریں موصول ہو رہی ہیں کہ پاکستان کی بلا جواز فائرنگ سے مالی اور جانی نقصان ہو رہا ہے اور پاکستان بھی بھارت کی بلا جواز فائرنگ سے ان کے شہری ہلاکت اور مالی نقصان ہونے کا اظہار کر رہا ہے۔ حالانکہ حقیقت بھی یہی ہے کہ دونوں طرف اہلکاروں کے علاوہ عام شہری بھی مارے جاتے ہیں ۔ یہ سلسلہ دونوں طرف سے جاری ہے ۔ تازہ فائرنگ میں بھارت نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ پاکستان کی بلاجواز فائرنگ سے بی ایس ایف اہلکار اور عام شہری کی ہلاکت ہوئی ہے۔ حالانکہ دونوں طرف سے مزیدپڑھیں

خوف و ہراس کا ماحول جاری

21 Oct 2017 کو شائع کیا گیا

وادی میں حالات ایک بار پھر سخت کشیدہ ہیں اور انتظامیہ گھبراہٹ کی شکار ہے، گذشتہ ایک ڈیڑھ مہینے سے وادی میں کئی جگہوں پر عورتوں کی چوٹیاں کاٹی جارہی ہیں، حالانکہ آج تک بال کاٹنے کے سلسلے میں ایک بھی ملزم کو گرفتار نہیں کیا گیا، پولیس کے مطابق اس کے پاس اب تک مجرموں کی نشاندہی کرنا ممکن نہ ہوسکا ۔ حکومت اسے لوگوں کا ہسٹیریا بتارہی ہے ۔ وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے ایک بیان میں کہا کہ چوٹیاں کاٹنا عورتوں کی توہین ہے جسے برداشت نہیں کیا جائے گا مگر دوسری اوور اس حوالے سے پولیس نے اپنی بے بسی کا اظہار کیا ہے ۔ کئی مزیدپڑھیں

چوٹیاں کاٹنے کی خوفناک لہر

09 Oct 2017 کو شائع کیا گیا

وادی میں تاحال چوٹیاں کاٹنے کا عمل جاری ہے ۔ سرینگر ، بارہمولہ اور بانڈی پوری سمیت جنوبی کشمیر کے مختلف علاقوں میں مبینہ طور کئی درجن عورتوں کے بال کاٹ دئے گئے۔بال کاٹنے کا یہ عمل انتہائی مشکوک ہے اور تاحال کسی بھی مجرم کا پتہ نہیں چل سکا ۔ پولیس بھی اس طرح کے کیسوں کی تہہ تک پہنچنے میںتاحال ناکام دکھ رہی ہے، عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ اس عمل میں سیکورٹی ایجنسیوں کا ہاتھ ہے،کئی حلقوں کی رائے ہے کہ جنگجووں کو لوگوں سے دور کرنے اور ان کے لئے جائے پناہ تلاش کرنے میں مشکلات پیدا کرنے کے لئے لوگوں کو مختلف حربوں مزیدپڑھیں

غریب طلبا جائیں تو جہاں کہاں؟

30 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

اس بات میں کوئی شک نہیں کہ جموں وکشمیر بھارت کی دوسری ریاستوں کی طرح ہر کسی میدان میں آگے بڑھ رہی ہے چاہئے وہ کھیل کا میدان ہو ، تعلیمی شعبہ ہو یا انفارمیشن ٹیکنالوجی ہو، غرض ہر کسی محاذ پرریاست کچھ کر دکھانے کی دوڑ میں لگی ہے، جو واقعی ایک حوصلہ افزا علامت بھی ہے۔ تاہم اگر ہم ترقی کی اس دوڑ میں صرف اور صرف اپنی انا اور خود غرضی کو ہی ترقی کی کنجی قرار دیں تو وہ نہ صرف ہماری معاشی اوراخلاقی بدحالی بلکہ انسانیت سوز علامت بھی ثابت ہوگی۔ ریاست کا تعلیمی شعبہ کو ہی اگر لیا جائے ہماری ریاست میں سرکاری مزیدپڑھیں

ذرا نہیں پورا سوچئے!

23 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

گذشتہ دنوں وزیر تعمیرات نعیم اختر نے ترال چندرگام نامی گائوں میں عوام کے نام ایک پُل وقف کیا، حالانکہ اس پُل پر پہلے سے ہی ٹریفک کی آواجاہی جاری تھی، تاہم وزیر تعمیرات نے پُل کا باضابطہ افتتاح کیا ہے، ستمبر2014 کے تباہ کن سیلاب نے اس جگہ کے پہلے پُل کو تباہ کر کے چھوڑا ہے، اب جبکہ اس جگہ پر دوسرا پُل تعمیر کیا گیا جس کا افتتاح نعیم اختر نے کیا تھا، تاہم چندریگام پُل کے افتتاح کرنے کے بعد وزیر تعمیرات نے علاقے میں زیر تعمیر دیگر کاموں کا معاینہ کرنے کا بھی پروگرام بنایا تھا اور اس دوران وہ اپنے قافلے سمیت بس سٹینڈ ترال سے مزیدپڑھیں

سرکاری ہسپتالوں میں کام کاج

16 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

وں توانسانی زندگیوں کو بچانے اور راحت رسانی کےلئے حکومت سرکاری اسپتالوں کو جدید طرز کی مشینریوں کے ساتھ ساتھ عملہ کو متحرک کرتا ہے اور عوام کو کسی بھی مشکلات کے بغیر علاج ومعالجے کی سہولیات بہم رکھتا ہے، لیکن بد قسمتی کی بات ہے کہ ہماری ریاست میں حکومت کی طرف سے تقریباً ہر علاقے میں ایسے ہسپتال یا پرائمری ہیلتھ سنٹرل قائم ہیں جہاں حقیقی معنوں میں دیکھا جائے تو وہاں عملے کی کام اور مریضوں کا علاج و معالجہ تسلی بخش نہ ہونے کی شکایات ہیں ،پرائیویٹ اسپتالوں کی بھر مار سے سرکاری اسپتالوں کا نظام آئے مزیدپڑھیں

اب صحافی بھی نشانے پر

09 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

کچھ روز قبل بنگلورو کی ایک معروف خاتون صحافی گوری لنکیش کو نامعلوم اسلحہ برداروں نے قتل کیا۔ خاتون صحافی کی قتل پر ہر طرف افسوس اور ناراضگی کا اظہار کیا جا رہا ہے، پورے ملک کے صحافیوں کے علاوہ بنگلورو کی صحافی برادری ابھی گوری کی ناحق قتل کی مذمت ہی کر رہی ہے کہ کئی اور صحافیوں کو مارنے کی دھمکیاں آرہی ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ صحافی گوری کی ہلاکت کے بعدارون دھتی رائے سمیت پانچ اور خواتین صحافیوں وقلمکاروں کوقتل کرنے کی دھمکی دی گئی ہے۔ ادھر این ڈی ٹی وے کے روش کمار کو بھی فیس بُک پر دھمکی برے پیغام مل مزیدپڑھیں