مضامین کالم کی خبریں

کشمیر ۔۔ تیری میری کہانی ہے

27 Jun 2020 کو شائع کیا گیا

رشید پروینؔ سوپور
rashid.parveen48@gmail.com

(قسط:۲ )

اس سے پہلے کہ اصل کہانی پر آجائیں ہم آپ کو کشمیر کی خوبصورتی کے بارے میں بتانا چاہیں گے ، لیکن کیسے بتائیں ، ایسے الفاظ زباںِ اردو میں ہوں تو ہوں لیکن میرے پاس نہیں جو کشمیر کی خوبصورتی ، دلکشی اور دلفریبی کی تصویر کھینچ سکیں اس لئے میں ان عظیم شعرا کی طرف ہی رخ کروں گا جنہوں نے کشمیر دیکھا ، اور پھر اس کی سحر انگیزی کو اپنے الفاظ کا پیرہن پہنانے کی کوشش مزیدپڑھیں

سر زمین کشمیر ،، تیر ے دامن سے جو آ ئیں ان ہواؤں کو سلام

21 Jun 2020 کو شائع کیا گیا

پہلے میں مناسب سمجھتا ہوں کہ آپکو یاد دلاوں کہ سر زمین وادی کشمیر کو ۔کشمیری زباں میں (پیر وار ) کہا جاتا ہے جس کا ترجمہ صوفی، سنتوں، فقیروں ،اولیاکرام ، غوث،و اقطاب کا صحن یا آنگن ہی ہوسکتا ، مزیدپڑھیں

کشمیر ۔۔ تیری میری کہانی ہے

21 Jun 2020 کو شائع کیا گیا

پچھلے برس روزنامہ ’’ منصف ‘‘حیدر آباد میں میرے مضامین کے علاوہ ایک قسط وار پولیٹیکل کہانی ’’جمہوری دلہن کی عصمت دری ۴۷ سے اب تک ‘‘ قسط وار آرہا تھا کہ آٹھ دس قسطوں کے بعد ہی ۵ اگست سے ساری زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ، نیٹ فضا میں تحلیل ہوکر رہ گیا اور قلمکاروں کے قلم بھی سسک سسک کردم توڈ گئے ، اسی دوران میرے ذہن کے کسی گوشے میں اس خیال نے جنم لیا تھا کہ کشمیر کی قابل ذکر تاریخ کے چند اوراق مزیدپڑھیں

وادی کے ہسپتالوں میں عملے کی کمی تشویشناک

07 Apr 2019 کو شائع کیا گیا

پرویز احمد
وادی میں قائم غیرں اور ادویات کی دکانوں کے خلاف کاروائی عمل میں لاتے ہوئے محکمہ صحت نے مختلف اضلاع میں چھاپہ مار کاروائیوں کے دوران 151نجی کلنکوں ، اسپتالوں اور ادویات کی دکانوں کو سیل کردیا ہے اور یہ عوام کی شکایتوں کو صحیح ثابت کرتے ہوئے غیر قانونی اسپتالوںیا ۔ محکمہ صحت کی جانب سے شروع کی گئی اس خصوصی مہم سے یہ بات ثابت ہوگئی ہے کہ دیہی علاقوں میں غیر قانونی کلنکوں مزیدپڑھیں

کیا کشمیر میں پیلٹ گن کا استعمال بند ہوگا؟

02 Apr 2019 کو شائع کیا گیا

نصیر احمد
یورپی پارلیمنٹ کے تقریباً پچاس ممبران نے گذشتہ دنوں وزیراعظم نریندر مودی کو شورش زدہ ریاست جموں وکشمیر میں بدنام زمان پیلٹ گن کا استعمال فوری طور بند کرنے کی ایک مشترکہ مکتوب میں گذارش کی۔ یورپی پارلیمنٹ کے ان منتخبہ ممبران نے اپنے مکتوب میں اس بات پر شدید تشوش کا اظہار کیا کہ ریاست میں سالہا سال کے انسانی حقوق کی لگاتار خلاف ورزیاں ہوتی آرہی ہیں اور امن و قانون کی صورتحال کو بنائے رکھنے کی مزیدپڑھیں

جماعتِ اسلامی پر پابندی کتنی صحیح!

23 Mar 2019 کو شائع کیا گیا

نصیر احمد
لیتہ پورہ پلوامہ میں 14فروری کو خودکش بم حملے کے ایک ہفتہ بعدجب سرکار نے کشمیر میںجماعتِ اسلامی پر کریک ڈاون کر کے تقریباََ چار سو جماعت کارکنوں کو گرفتار کرنے کا سلسلہ شروع کیا تھا، اس بات کے اندیشے ظاہر کئے جا رہے تھے کہ مرکزی سرکار الیکشن سے قبل ریاست میں سیاسی سطح پر کچھ بڑا کرنے کاارادہ رکھتی ہے۔ یہ ابہام 28 فروری کی شام کو ختم ہوا۔ مرکزی وزارتِ داخلہ نے انتہا پسندی اور ملیٹنسی کو فروغ دینے مزیدپڑھیں

بھارت پاک کشید گی اور مسئلہ کشمیر

10 Mar 2019 کو شائع کیا گیا

14فروری کو لیتہ پورہ پلوامہ میں کشمیر کی عسکری تاریخ کا سب سے خونین حملہ ہو نے کے بعد پہلے سے ہی کشیدہ بھارت پاک تعلقات میں مزید کڑواہٹ پیدا ہو ئی اور بھارتی اسٹیبلشمنٹ میں اس حملے کے بعد سے زبر دست ہیجانی کیفیت عیاں ہوئی۔ایک طرف اس حملے میں مارے جانے والے 40سے زیادہ سی آر پی ایف اہلکاروں کی ہلاکت پر بھارتی افواج کے ایک بڑے طبقے میں پاکستان کے خلاف بدلے کی آگ یکا یک بڑھک اٹھی اور دوسری جانب بھارتی مین سٹریم میڈیا نے مزیدپڑھیں

محبوبہ مفتی کا دورِ اقتدار

05 Jan 2019 کو شائع کیا گیا

یوسف ندیم

پی ڈی پی صدراور سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے اپنا پرانا طریقہ کار ایک بار پھر اختیار کرکے ماضی کی طرح مہلوک ملی ٹنٹوں کے گھر جاکر مگر مچھ کے آنسو بہانے کی روایت شروع کی ہے۔ ایسا طریقہ کار محبوبہ مفتی نے 2014کے انتخابات سے قبل بھی اختیار کیا تھا۔ پھر جب 2015میں اقتدار ملا تو آنسو بہانے کے طریقہ کار کو خیرباد کہہ دیا اور ایکدم کشمیر میں اس حد تک قتل و غارت اور ظلم و ستم کا بازار مزیدپڑھیں

شوپیاں میں تین پولیس اہلکار اغواء کے بعد قتل

22 Sep 2018 کو شائع کیا گیا

گذشتہ دنوں یعنی 10 محرم الحرام 21 ستمبر کے روز جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان کے بٹہ گنڈاورکاپرن گاؤں میں دوران شب مبینہ طورپرجنگجوؤں کے ہاتھوں گھروں سے اغواء کئے گئے 2ایس پی اوؤزاورایک پولیس کانسٹیبل کی گولیوں سے چھلنی نعشیں جمعہ کی صبح لامنی ونگام سے برآمدہونے کے بعدپورے جنوبی کشمیرمیں خوف وہراس اورتشویش کی لہردوڑ گئی۔اور حالیہ دھمکی اورتین اہلکاروں کی ہلاکت کے بعد بیک وقت تین پولیس اہلکاروں کی ہلاکت کاواقعہ پیش آنے کے مزیدپڑھیں

35Aپر پالیسی واضح نہ کرنے تک نیشنل کانفرنس کسی بھی الیکشن کا حصہ نہیں بنے گی

09 Sep 2018 کو شائع کیا گیا

نیشنل کانفرنس صدر اور ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے خبردار کیا کہ اگر مرکزی حکومت نے 35Aپر پالیسی واضح نہیں کی تو این سی پنچائتی اور بلدیاتی انتخابات کیساتھ ساتھ لوک سبھا اور پارلیمنٹ انتخابات کا بھی بائیکاٹ کریگی ۔ تاہم انہوں نے امید ظاہر کی کہ نئی پاکستانی حکومت کیساتھ مذاکرات کی بحالی میں مرکزی حکومت پیش رفت کر سکتی ہے ۔
مرحوم شیر کشمیر شیخ محمد عبداللہ کے مزیدپڑھیں