اِسلا میات کالم کی خبریں

سیدنا حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ

22 Sep 2018 کو شائع کیا گیا

محمد عبدالمتعالی نعمان
نواسۂ رسولﷺ،جگر گوشۂ بتول ؓ،نوجوانانِ جنت کے سردار، کربلا کے قافلہ سالار، حق و صداقت کے علم بردار، سبطِ رسول ﷺسید نا حضرت حسینؓ، رحمۃ للعالمین، خاتم النبیین حضرت محمد مصطفیٰﷺ کے چہیتے نواسے، شیر خدا حضرت علی کرم اللہ وجہہ اور سیدۃ النساء اہل الجنۃ حضرت فاطمۃ الزہراءؓکے عظیم فرزنداور حضرت حسنؓ کے چھوٹے بھائی ہیں۔ ابو عبداللہ آپؓ کی کنیت، سید، طیب، مبارک، سبط النبیؐ، ریحانۃ النبیؐ اور مزیدپڑھیں

رسول اکرم ﷺ کا اہل بیت کے ساتھ بے مثال شفقت و محبت کا معاملہ

17 Sep 2018 کو شائع کیا گیا

قمر سنبھلیؔ
حضور اکرم رحمت عالم ﷺ کی ذات ستودہ صفات سراپا رحمت و شفقت ہے۔ آپ کو رحمۃ اللعلمین بنا کر مبعوث فرمایا گیا۔ اس لئے آپ کائنات کی ہر شے کے لئے باعث رحمت ہیں۔ جب آپ ؐ کی رحمت و شفقت کا معاملہ اس قدر وسیع اور عام ہو تو اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ آپؐ اپنے عیال اور اہل بیت کے لئے کیسے روئف و رحیم رہے ہوں گے۔ مزیدپڑھیں

سیدنا حضرت عثمانِ غنی رضی اﷲ عنہ

02 Sep 2018 کو شائع کیا گیا

فتی محمد نعیم
سرکارِ دوجہاں ﷺ کے داماد،عشرۂ مبشرہؓ میں بلند مقام کے حامل،خلیفۂ رسولؐ،امیر المؤمنین،شہید مظلوم حضرت عثمان غنی رضی اﷲ عنہ رسول اللہ ﷺ کے جلیل القدر صحابہؓ میں سے ہیں۔ جامع القرآن سیدنا عثمان بن عفان ؓ کی سیرتِ طیبہ فضائل و مناقب کا ایک روشن باب ہے۔آپ کی پیدائش مکہ معظمہ میں ہوئی۔نسب اس طرح ہے، عثمانؓ بن عفان بن ابی العاص بن امیہّ بن عبد شمس اموی قریشی۔(ابن عساکر) لقب ذوالنور ین ہے۔ مزیدپڑھیں

حج ،اہمیت اور فوائد

21 Jul 2018 کو شائع کیا گیا

سید ابوالااعلیٰ مودودی
اللہ تعالیٰ نے ہم پر کوئی عبادت ایسی فرض نہیں فرمائی ہے جس میں بے شمار روحانی، اخلاقی، اجتماعی، تمدنی اور مادی فوائد نہ ہوں۔ ظاہری بات ہے کہ اللہ تعالیٰ کو اپنی ذات کے لیے تو کسی کی عبادت کی کوئی حاجت نہیں ہے۔ اُس نے جو عبادت بھی بندوں پر فرض کی ہے وہ خود بندوں کی بھلائی کے لیے ہے۔ اللہ تعالیٰ کی ذات ہر احتیاج سے بالاتر اور ہر نفع اور فائدے کی ضرورت سے بلند تر ہے۔ لیکن جتنی عبادتیں بھی اُس نے فرض کی ہیں اُن کا ایک تو مقصدِ اصلی ہے جس کے لیے وہ فرض کی گئی ہیں، اور اس کے علاوہ بے شمار مزیدپڑھیں

شرم وحیا، عِفت و پاکیزگی

14 Jul 2018 کو شائع کیا گیا

اسلام میں شرم و حیا کو بنیادی اہمیت حاصل ہے،یہ درحقیقت ایک اسلامی معاشرے کی بنیادی شناخت ہیں۔سرورِ کائنات حضرت محمدﷺ کا ارشادِ گرامی ہے:’’حیا ‘‘ایمان کا ایک بنیادی شعبہ ہے۔اسی بنیاد پر فرمایا گیا :جب تم حیا کو کھودو،تو جو چاہے کرو۔یعنی انسانی زندگی سے اگر شرم و حیا معدوم ہوجائے تو ایسی زندگی کی کوئی قدرومنزلت نہیں۔اس لیے کہ شرم و حیا اسلامی معاشرے کے لازمی جزو ہیں۔اسلامی تہذیب وثقافت اور مسلم معاشرہ برائیوں کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا مزیدپڑھیں

لیلۃ القدر، ستائیسویں شب!

10 Jun 2018 کو شائع کیا گیا

ید ابوالااعلیٰ مودودی
حضرت اُبی بن کعبؓ نے بغیر استثنا کیے ہوئے حلفاً یہ کہا کہ وہ رمضان کی ستائیسویں تاریخ ہے (پوچھا گیا کہ) آپ یہ بات کس بنا پر کہہ رہے ہیں؟ انہوں نے جواب دیا: (میں یہ بات) ایک علامت یا نشانی کی بنا پر کہہ رہا ہوں جو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیں بتائی تھی اور وہ نشانی یہ ہے کہ اس روز جو سورج نکلے گا تو اس میں شعاع نہیں ہوگی۔ (مسلم)
’شعاع نہیں ہوگی‘ سے مراد یہ ہے کہ شعاع میں تیزی نہیں ہوگی۔ ایسا اس بنا پر بھی ہوسکتا ہے کہ بادل ہونے کی وجہ سے سورج مزیدپڑھیں

رسول اللہﷺ کی صفاتِ عالیہ اور اخلاق حسنہ کا بیان

21 Oct 2017 کو شائع کیا گیا

حضرت مولانا مفتی محمد عاشق
لَقَدْ جَآئَ کُمْ رَسُوْلٌ مِّنْ اَنْفُسِکُمْ عَزِیْزٌعَلَیْہِ مَا عَنِتُّمْ حَرِیْصٌ عَلَیْکُمْ بِالْمُؤْمِنِیْنَ رَءُوْفٌ رَّحِیْمٌm فَاِنْ تَوَلَّوْا فَقُلْ حَسْبِیَ اللہُ لَآ اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ عَلَیْہِ تَوَکَّلْتُ وَہُوَ رَبُّ الْعَرْشِ الْعَظِیْمِm (سورۃ التوبۃ: ۱۲۸، ۱۲۹)
ترجمہ: بلاشبہ تمہارے پاس رسول آیا ہے، جو تم میں سے ہے تمہیں جو تکلیف پہنچے وہ اس کے لیے نہایت گراں ہے وہ تمہارے مزیدپڑھیں

پیغام حسینی کی ابدی افادیت

30 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

سید شریف الحسن نقوی
ظہور اسلام سے قبل عرب میں موجد اعظم حضرت ابراہیم کاتعمیرکردہ خدا کا گھر عملاً بتوں کا گھر بن گیا تھا۔ مصر، یونان، روم، ایران اور ہندوستان جیسے قدیم ممالک کی طرح عرب میں خدا کے علاوہ تمام بارعب اور متاثر کن طاقت کی پرستش عام تھی۔ عرب جنگ جوئی اور خون خواری میں یقین رکھتے تھے۔ ان حالات میں نبی آخر الاماں حضرت محمدﷺ کا ورد ہوا۔ انہوں نے نہ صرف دین ابراہیم کی تجدید کی بلکہ اس کو حکم الٰہی کے مخالف عوام الناس میں قابل قبول بنا کر اعلیٰ اقدار کا حامل بنا دیا۔ اولامخفی طور پر محدود طبقے مزیدپڑھیں

پیغام حسینی کی ابدی افادیت

30 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

ظہور اسلام سے قبل عرب میں موجد اعظم حضرت ابراہیم کاتعمیرکردہ خدا کا گھر عملاً بتوں کا گھر بن گیا تھا۔ مصر، یونان، روم، ایران اور ہندوستان جیسے قدیم ممالک کی طرح عرب میں خدا کے علاوہ تمام بارعب اور متاثر کن طاقت کی پرستش عام تھی۔ عرب جنگ جوئی اور خون خواری میں یقین رکھتے تھے۔ ان حالات میں نبی آخر الاماں حضرت محمدﷺ کا ورد ہوا۔ انہوں نے نہ صرف دین ابراہیم کی تجدید کی بلکہ اس کو حکم الٰہی کے مخالف عوام الناس میں قابل قبول بنا کر اعلیٰ اقدار کا حامل بنا دیا۔ اولامخفی طور پر محدود طبقے میں دعوت اسلام دی اور پھر بر سرعام اشاعت اسلام کا پرچم لہرایا۔ اسی نبی کریم ؐ نے اپنے بھائی اور داماد حضرت علی اور ان کے دونوں صاحبزادوں حسن اور حسین کی اخلاقی اور روحانی تربیت کے وہ علی جو مسجد نبوی کی تعمیر کے وقت اینٹ اور گار لاکر نبی اکرمؐ کی خدمت کر رہے تھے، مختلف جنگوں اور غذوات میں اپنا سر ہتھیلی پر رکھ کر کفار اور مشرکین سے نبرد آزما نظر آرہے تھے۔ بدر،خیبر اور خندق کی جنگیں ان کی سرفروشانہ خدمات کی ریشہ دوانیوں کا خاتمہ کرنے کے لئے معاویہ سے صلح کی اور انہیں کے دوسرے صاحبزادے امام حسین ؑ نے کربلا کے ریگزار پر معاویہ کے بیٹے یزید کے خلاف 61ہجری میں شر اور بدی کے خلاف وہ جنگ کی جس کے نتیجے کے طور پر اسلام خوف و ہراس، ظلم و تشدد، آمریت اور بربریت سے عہدہ برآہو سکا۔
مزیدپڑھیں

قرآن کی عظیم ترین آیت آیۃ الکرسی

14 Aug 2017 کو شائع کیا گیا

مفتی محمد ریاض ارمان القاسمی
اَللّٰہُ لَا اِلٰہَ اِلَّا ہُوَ اَلْحَیُّ الْقَیُّوْمُ لَا تَاْخُذُہٗ سِنَۃٌ وَّ لَا نَوْمٌ لَہٗ مَا فِی السَّمٰوٰتِ وَ مَا فِی الْاَرْضِ مَنْ ذَا الَّذِیْ یَشْفَعُ عِنْدَہٗ اِلَّا بِاِذْنِہٖ یَعْلَمُ مَا بَیْنَ اَیْدِیْہِمْ وَ مَا خَلْفَہُمْ وَ لَا یُحِیْطُوْنَ بِشَیْءٍ مِّنْ عِلْمِہٖ اِلَّا بِمَا شَآءَ وَسِعَ کُرْسِیُّہُ السَّمٰوٰتِ وَ الْاَرْضَ وَ لَا یَـُٔوْدُہٗ حِفْظُہُمَا وَ ہُوَ الْعَلِیُّ الْعَظِیْمُ
ترجمہ: اللہ وہ ہے جس کے سوا کوئی معبود نہیں ،جو سدا زندہ ہے ،جو پوری کائنات سنبھالے ہوئے ہے، جس کو نہ کبھی اونگھ لگتی ہے،نہ نیند ۔آسمانوں میں جو کچھ ہے (وہ بھی ) اور زمین میں جو کچھ ہے (وہ ) بھی سب اسی کا ہے ۔کون ہے جو اس کے حضور اس کی مزیدپڑھیں