نقطہ نظر کالم کی خبریں

گجرات کے انتخابات میں مودی کی مداخلت

21 Oct 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائر
الیکشن کمیشن نے ایسا پہلے کبھی نہیں کیا بلکہ چیف الیکشن کمشنر ٹی این سیشان کے بعد سے کمیشن نے آزاد و خود مختار حیثیت اختیار کر لی اور کمیشن کو ایک ایسا درجہ دیدیا گیا جسے رائے دہندگان نے بہت سراہا۔ لیکن الیکشن کمیشن نے جس انداز سے گجرات کے الیکشن کی تاریخوں میں رد و بدل کیا ہے اس پر بہت سے اعتراضات بھی اٹھے ہیں۔ بعض لوگ تو اس میں مزیدپڑھیں

ایک پارٹ ٹائم وزیراعلیٰ

09 Oct 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائر
اتر پردیش (یو پی) کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا ہے کہ وہ ہر مہینے پانچ دن کی چھٹی پر جایا کریں گے تا کہ گورکھناتھ مندر میں مہنت یعنی پجاریوں کے سربراہ کی حیثیت سے اپنے فرائض ادا کر سکیں۔ ٹیلی ویژن نیٹ ورکس نے اس تقریر کا یہ حصہ صرف ایک مرتبہ نشر کیا۔ یا تو بی جے پی نے ٹی وی چینل پر دباؤ ڈالا ہو گا کہ یہ خبر ہٹا لی جائے یا پھر وزیراعلیٰ خود ہی اتنے شرمسار ہوئے ہونگے کہ انھوں نے اپنا بیان واپس لے لیا۔ یہی وجہ ہو سکتی ہے کہ یہ تقریر صبح کے اخبارات میں شایع ہونے سے بھی محروم رہی۔ مزیدپڑھیں

روہنگیا مسلمانوں کا مسئلہ اور بھارت !

30 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائر
کمیونسٹ لیڈر جیوتی باسو نے پچیس سال تک مغربی بنگال پر حکمرانی کی ہے۔ وہ فرقہ پرست قوتوں کے خلاف بڑی بے جگری سے لڑتے رہے لیکن یہ حیرت کی بات ہے کہ آر ایس ایس کسی طرح ریاست میں داخل ہو گئی بلکہ عملی طور پر ریاست پر قبضہ کر لیا۔ وزیراعلیٰ ممتا بینرجی کی ترنمول کانگریس اب ریاست پر اقتدار میں ہے لیکن اس کے بیان سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ وہ اپنی جنگ ہار رہے ہیں۔ آر ایس ایس ریاست کے اندرونی مزیدپڑھیں

عورتوں کو اختیارات دینے کے اقدامات

23 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائر
بھارتی خواتین کی نشستیں مخصوص کرنے کا بل یعنی مسودہ قانون بوجوہ پارلیمنٹ میں منظور نہیں ہوسکا۔ ممکن ہے اس میں دیگر رکاوٹوں کے ساتھ مردانہ ہٹ دھرمی کا بھی عمل دخل ہو۔ یہ مسودہ قانون پہلی مرتبہ 1996ء میں لوک سبھا کے روبرو پیش کیا گیا جب دیو گوڈا وزیراعظم تھے۔ اس مسودہ قانون کے حوالے سے پارلیمنٹ میں بڑا شور و غوغا ہوا۔ حتیٰ کہ اس کارروائی کے دوران سڑکوں پر احتجاجی مظاہرے بھی کیے گئے تا آنکہ مزیدپڑھیں

بھارتی مسلمان علیحدہ بستیوں میں منتقل ہو رہے ہیں

16 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائیر
کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی کا یہ کہنا درست نہیں کہ سارے بھارت پر خاندانوں کی حکومت ہے یعنی مرکز میں اقتدار خاندانی سیاست کا ہے۔ صرف جواہر لعل نہرو کے خاندان کو خاندانی اقتدار کا موقع ملا ہے۔ نہرو نے 17 سال بھارت پر حکومت کی ان کی بیٹی اندرا گاندھی نے 18 سال حکومت کی اور اندرا کا بیٹا راجیو گاندھی 5 سال حکمران رہا۔ چنانچہ یہ مزیدپڑھیں

مودی دلتوں کے حق میں آواز اٹھائیں

09 Sep 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائر
ہاتھوں میں رنگ برنگے پھولوں کا ایک بہت بڑا گلدستہ تھام کر آر ایس ایس کا چیف موہن بھگوت مغربی بنگال کے دارالحکومت کولکتہ پر دھاوا بولنے کا ارادہ کر رہا تھا جب صوبے کی وزیراعلیٰ ممتاز بینرجی نے اس ہال کا استعمال منسوخ کر دیا جسے آر ایس ایس نے اپنی تقریب کے لیے بک کروایا تھا‘ اس پر آر ایس ایس نے ہال کی تنسیخ کو غیر جمہوری اقدام قرار دیا ہے ۔گو یہ اعتراض یکسر بے جا نہیں مگر جب ہم مسلمانوں اور ہندوؤں میں نفرت پھیلانے کا آر ایس ایس کا ریکارڈ دیکھتے ہیں تو ہال کی منسوخی کا اقدام جائز مزیدپڑھیں

تین طلاقوں پر پابندی کا مسئلہ

26 Aug 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائیر
بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ بہت سخت ہے اور اس میں کسی قسم کا کوئی ابہام بھی نہیں ہے۔ بھارتی آئین کے منافی کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا جس میں مردوں اور عورتوں کو اپنی زندگی آزادانہ طور پر گزارنے کی ضمانت دی گئی ہے۔
میری خواہش ہے کہ بھارتی مسلمانوں کو سپریم کورٹ کی طرف سے بیک وقت تین طلاقوں پر پابندی کے فیصلے کو قبول کر لینا چاہیے تھا لیکن لگتا ہے کہ مسلمانوں کے کئی طبقے اس سے متفق نہیں ہیں۔ یہ ایک مسلمان خاتون شاہ بانو کے مقدمہ سے مماثل ہے مزیدپڑھیں

خوشی اور درد و الم کے70سال

14 Aug 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائیر
یوم آزادی کی تقریبات سے مجھے وہ دن یاد آجاتے ہیں جو میں نے اپنے آبائی شہر سیالکوٹ میں بسر کیے۔ قانون کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد میں ایک وکیل کے طور پر اپنا کیرئیر شروع کرنا چاہتا تھا لیکن تقسیم نے میرے سارے منصوبوں کو تہہ و بالا کر دیا اور مجھے اس جگہ کو چھوڑنے پر مجبور ہونا پڑا جہاں پر کہ میں پیدا ہوا اور پروان چڑھا۔ جب بھی میں اس کے بارے میں سوچتا ہوں تو غمزدہ ہو جاتا ہوں۔ سیاہ بادلوں کے کنارے پر جو چمکتی ہوئی لائن نظر آتی ہے وہ یہ کہ ہندوؤں اور مسلمانوں کے ذاتی تعلقات زیادہ تر متاثر مزیدپڑھیں

صدر کے انتخاب کے لیے معیار!

19 Jun 2017 کو شائع کیا گیا

کلدیپ نائر
بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اپنی مسلمان دشمنی کے زہریلے دانت چھپا نہیں سکتی۔ بجائے اس کے کہ بھارتی نائب صدر حامد انصاری کے صدارتی امید وار بننے کے پیچھے اتفاق رائے کی کوشش کرتی اس کے بجائے پارٹی نے تین چوٹی کے لیڈروں کی ذمے داری لگا دی ہے کہ وہ کوئی ایسا امید وار تلاش کریں جسے زیادہ سے زیادہ سیاسی جماعتوں کی حمایت حاصل ہو۔
مجھے سمجھ نہیں آتی کہ آخر نائب صدر انصاری میں کیا کمی ہے۔ انھوں نے راجیہ سبھا کی قیادت بے حد اچھے طریقے سے مزیدپڑھیں

میڈیا کے خلاف مودی حکومت کے ہتھکنڈے

11 Jun 2017 کو شائع کیا گیا

لدیپ نائر
جب مرکزی تحقیقاتی بیورو (سی بی آئی) میں این ڈی ٹی وی کے مالکان پر اس مبینہ الزام کے تحت چھاپہ مار کارروائی کی کہ انھوں نے کروڑوں روپے کی رقم کے حصص کی ترسیل چھپا کر ایک نجی بینک کو 48 کروڑ روپے کا نقصان پہنچایا۔ یہ روایتی طور پر ویسا ہی جھوٹا الزام ہے جیسا کہ حکومتیں کسی کے خلاف کارروائی کے لیے لگاتی ہیں۔
این ڈی ٹی وی کی شریک پروپرائٹر رادھیکا رائے کا کہنا ہے کہ ان پر جھوٹا مزیدپڑھیں