خبریں

انتخابات کا بائیکاٹ غلام قوم کیلئے لازمی

انتخابات کا بائیکاٹ غلام قوم کیلئے لازمی

پارلیمانی انتخابات کا مکمل بائیکاٹ کرنے کی اپیل دہراتے ہوئے حریت (گ ) چیئرمین سید علی گیلانی نے آزادی پسند قیادت اور کارکنوں کی بے تحاشا گرفتاریوں اور نظر بندیوں کے خلاف احتجاجاً 21اپریل کو مکمل ہڑتال کی کال دی۔ حریت چیئرمین نے کہا کہ 24اور30اپریل کے علاوہ 7مئی کو متعلقہ علاقوں میں پولنگ ایام کے دوران سول کرفیو نافذ کرنے اوران ایام سے ایک روز قبل شام کے وقت احتجاجی مظاہرے کرنے کی تلقین کی۔ توسہ میدان کے بدلے فوج کو دوسری جگہ زمینیں فراہم کرنے کے مطالبے کو مسترد کئے جانے کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہاں فوج کے قبضے میں 28لاکھ کنال اراضی پہلے سے ہی ہے اور دفعہ370کی بات کرنے والوں نے ہی یہ اراضی فوج کو فروخت کی ہے۔ نئی دلی سے واپسی کے بعد خانہ نظر بندی کے دوران پہلی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے گیلانی نے کہاکہ انتخابی ڈرامے کو رچا کر بھارت یہاں کے عوام کے ووٹ کا استحصال کرتا آیا ہے اور اب بھی اس کا مقصد یہی ہے ۔انہوں نے نیشنل کانفرنس،کانگریس، پی ڈی پی ،عوامی اتحاد پارٹی اور پیپلز کانفرنس سمیت دیگر ہند نواز پارٹیوں اور لیڈروں کو بھارت کے قبضے کو دوام بخشنے کے لئے دلی کے آلہ کار قرار دیتے ہوئے کہاکہ یہی لوگ سڑک پانی اور بجلی کیلئے عوام کو ووٹ ڈالنے کیلئے اکساتے ہیں اور اپنے اقتدار پانے کے بعد وہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بھارت کی پالیسیوں کو یہاں عملانے کیلئے کام کرتے ہیں ۔