خبریں

عالمی سطح پر تیزی کیساتھ
جغرافیائی سیاسی صورتحال بدل رہی ہے

عالمی سطح پر تیزی کیساتھ<br>جغرافیائی سیاسی صورتحال بدل رہی ہے

گذشتہ دنوںوزیردفاع راجناتھ سنگھ نے خبردارکیاکہ ہندوستان کی قومی سلامتی کے چیلنج پیچیدہ ہورہے ہیں کیونکہ عالمی سطح پر تیزی کیساتھ جغرافیائی سیاسی صورتحال بدل رہی ہے ۔ اس بدلتی صورتحال اوردرپیش چیلنجوں کامقابلہ کرنے کیلئے ملک میں ایک مضبوط ،قابل اورمکمل طورپر خودانحصار دفاعی صنعت کوفروغ دینے کی ضرورت ہے۔ وزیردفاع راجناتھ سنگھ نے افغانستان میں طالبان کی اقتدارمیں واپسی اور2دہائیوں کے بعدامریکی فوج کے انخلاءکے بعدپیداشدہ صورتحال کے تناظر میں کہا کہ عالمی سطح پر بدلتی جغرافیائی سیاسی صورتحال کے پیش نظر ہندوستان کی قومی سلامتی کے چیلنجز بڑھتے جا رہے ہیں اور یہ چیلنج پیچیدہ ہو رہے ہیں ۔ملک میں ایک مضبوط ، قابل اور مکمل طور پر ’خود انحصار‘دفاعی صنعت کی تاکید کی۔ راجناتھ سنگھ نے جمعرات کونئی دہلی میں ڈیفنس انڈیا اسٹارٹ اپ چیلنج5.0 لانچ کرنے کے بعدکہاکہ آج پوری دنیا میں سیکورٹی کا منظر نامہ بہت تیزی سے بدل رہا ہے۔ اس کی وجہ سے ، ہماری قومی سلامتی کےلئے چیلنجز بڑھ رہے ہیں اور پیچیدہ ہوتے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ عالمی جغرافیائی سیاسی صورتحال میں مسلسل تبدیلیاں آرہی ہیں۔وزیردفاع راجناتھ سنگھ کہا کہ تیزی سے بدلتے ہوئے سیکورٹی چیلنجز پر غور کرتے ہوئے ، بھارت کو مسلح افواج کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے مضبوط ، قابل اور خود انحصاردفاعی صنعت رکھنے پر توجہ دینی چاہیے۔وزیر دفاع نے کہا کہ یہ ضروری ہے کہ ہم نہ صرف مضبوط ، جدید اور اچھی طرح سے لیس افواج بنائیں بلکہ اپنی دفاعی صنعت کو بھی ترقی دیں جو کہ اتنی ہی مضبوط ، قابل اور سب سے اہم بات یہ ہے کہ مکمل طور پر خود انحصار ہے۔وزیر دفاع نے نجی شعبے پر زور دیا کہ وہ دفاعی مینوفیکچرنگ سیکٹر کو مضبوط بنانے میں اپنا کردار ادا کرے۔انہوں نے حکومت کی طرف سے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرتے ہوئے کہاکہ میں نجی شعبے سے کہتا ہوں کہ وہ آگے آئیں اور ایک مضبوط اور خود انحصار دفاعی شعبے کی تعمیر میں اپنا کردار ادا کریں۔وزیردفاع راجناتھ سنگھ کاکہناتھا کہ ہمارے ملک میں نہ تو ٹیلنٹ یعنی فطری استعداد کی کمی ہے اور نہ ہی ٹیلنٹ کی طلب میں کمی ہے۔ لیکن ایک مشترکہ پلیٹ فارم کی عدم موجودگی میں دونوں مماثل نہ ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ’آئی ڈی ایکس‘پلیٹ فارم اس خلا کو پر کرنے میں بڑی حدتک کامیاب رہا ہے۔راجناتھ سنگھ نے کہاکہ پچھلے دو سالوں میں ، حکومت نے ہندوستان کو دفاعی مینوفیکچرنگ کا مرکز بنانے کے لیے اصلاحی اقدامات اور اقدامات کی ایک سیریز سے پردہ اٹھایا ہے۔یادرہے پچھلے اگست میں ، راجناتھ سنگھ نے اعلان کیا تھا کہ بھارت2024 تک101 ہتھیاروں اور فوجی پلیٹ فارمز جیسے ٹرانسپورٹ ایئر کرافٹ ، لائٹ کمبیٹ ہیلی کاپٹر ، روایتی آبدوزوں ، کروز میزائلوں اور سونار سسٹم کی درآمد کو روک دے گا۔