خبریں

عمر عبداللہ سونہ وار سے ہوں گے امیدوار

عمر عبداللہ سونہ وار سے ہوں گے امیدوار

نیشنل کانفرنس نے مجموعی طور پر اس بات پر اتفاق رائے کیا ہے کہ وزیراعلیٰ امیدوار کیلئے عمر عبداللہ گاندربل کے بجائے حلقہ انتخاب سونہ وار سے اسمبلی چناو میں حصہ لیں گے جبکہ اس بات کا بھی فیصلہ کیا گیا کہ موجودہ 28 اراکین اسمبلی میں سے صرف 2 کو ڈراپ کیا جائے گا۔ جڈی بل، ڈورو، اننت ناگ اور راجوری کی نشستوں پر ابھی تک کوئی حتمی فیصلہ نہیں کیا جاسکا ہے۔ اب حتمی فیصلہ پارلیمانی بورڈ کی میٹنگ میںکرنے کے بعدامیدواروں کی فہرست پریس کانفرنس کے دوران جاری کردی جائے گی۔ جمعہ کی شام پارٹی کی پارلیمانی بورڈکی میٹنگ پارٹی سرپرست ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی صدارت میں اْن کی رہائش گاہ پر منعقد ہوئی۔ اس سے قبل ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ بھی منعقد ہوئی۔ بتایا کہ ورکنگ کمیٹی میٹنگ میں اْن نشستوں پر امیدواروں کی نامزدگی کا معاملہ زیر بحث آیا جہاں ابھی تک پارٹی نے امیدواروں کی نامزدگی نہیں کی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ اْن تمام نشستوں پر ممکنہ امیدواروں کے حوالے سے اْن فہرستوں پر تبادلہ خیال ہوا جو بلاک سطح پر پارٹی قیادت کو موصول ہوئے ہیں۔ تفصیل کے ساتھ تبادلہ خیال کرنے کے بعد کئی نشستوں پر جو رائے قائم کی گئی اور جن ممکنہ امیدواروں کے بارے میں اتفاق پایا گیا اس پر بعد میں پارلیمانی بورڈ کی میٹنگ میں مزید مشاورت کی گئی۔ پارلیمانی بورڈ میٹنگ، جو نیشنل کانفرنس کی فیصلہ ساز باڑی ہے، میں سب سے پہلے وزیراعلیٰ عمر عبداللہ کی نامزدگی کے معاملے پر مشاورت ہوئی۔ بورڈ میٹنگ میں موجود ایک سینئر ممبر کے مطابق اس بات پر تمام ممبران نے اصولی طور پر اتفاق کیا کہ عمر عبداللہ سونہ وار حلقہ انتخاب سے الیکشن لڑیں گے جبکہ گاندربل حلقے سے اشفاق جبار کی نامزدگی پر غور کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ میٹنگ کے دوران یہ بات طے ہوئی کہ عمر عبداللہ کی نامزدگی سونہ وار حلقے سے ہوگی اور اس بات پر بھی مشاورت کی گئی کہ ڈاکٹر مصطفی کمال کے حلقہ انتخاب حضرت بل میں تغیر و تبدل ہوسکتا ہے۔ مذکورہ ممبر کا کہنا تھا کہ حضرت بل حلقے کیلئے سعید آخون کا نام زیر غور آیا اور اس پر اتفاق بھی پایا گیا۔ مذکورہ ممبر کے مطابق پارلیمانی بورڈ میٹنگ میں تمام ممبران نے اس بات پر اتفاق کیا کہ موجودہ 28 اراکین اسمبلی میں سے صرف 2کو ڈراپ کیا جائے جن میں حلقہ انتخاب سونہ وار سے محمد یاسین شاہ اور جڈی بل حلقے سے پیر آفاق شامل ہیں، جبکہ ڈاکٹرکمال کو ممکنہ طور پر اپنے پرانے حلقے گلمرگ سے منڈیٹ دیا جائے۔ جڈی بل حلقے سے تنویر صادق کے نام پر غور ہوا البتہ فیصلہ نہیں ہوسکا‘‘۔ اْن کا کہنا تھا تاہم میٹنگ میں راجوری، ڈورو، اننت ناگ اور جڈی بل حلقوں کیلئے امیدواروں کی نامزدگی پر کوئی فیصلہ نہیں ہوا۔