اداریہ

لوک سبھا چنائو ں کا اعلان

اب جبکہ ملک میں لوک سبھا الیکشن کا بُگل بج ہی گیا اور تمام چھوٹی بڑی سیاسی پارٹیاں متحرک ہو گئیں۔ لوک سبھا الیکشن کے تاریخوں کا اگرچہ چیف الیکشن کمشنر آف انڈیا نے باضابطہ طور اعلان بھی کیا تاہم مشاہدے میں آتا ہے کہ اس بار ملک میں کانگریس پارٹی کچھ زیادہ آگے جانے والی نہیں۔ ہاں یہ بھی سچ ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی بھی کچھ زیادہ بہتر امیج نہیں ہے تاہم عوامی حلقوں کی رائے ہے کہ بی جے پی لوک سبھا چنائو میں کانگریس سے زیادہ نشستیں حاصل کرنے والی پارٹی ہو گی۔ عوامی حلقے اس بات کا بھی اشارہ دے رہے ہیں کہ اروندکیجروال کی عام آدمی پارٹی بھی ضرور اپنا کھاتہ کھولے گی۔ اخذ کیا جاتا ہے کہ ملک میں کانگریس کی ساکھ اب دن بہ دن بگڑتی جاتی ہے اور بی جے پی اور عام آدمی پارٹی عوام کے دلوں کو اپنے طرف لبھانے کی جے توڑ کوشش کر رہے ہیں۔ ادھر ریاست کی سیاسی صورتحال پر اگر نظر ڈالی جائیں تو یہی سمجھنے کو ملتا ہے کہ ریاست میں کانگریس پارٹی دن بہ دن مضبوط ہوتی جا رہی ہے اور اس پارٹی کا ایک طرح سے لاٹری نکل رہی ہے ہر کسی جماعت کے ساتھ اقتدار میں رہنے سے یہ آئے روز زیادہ سے زیادہ مضبوط ہو رہی ہے۔ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کبھی آپس میں اتحاد کرنے والی پارٹیاں نہیںہیں لہٰذا دونوں پارٹیوں کو کانگریس کے ساتھ اتحاد کرناضروری ہے ، اکیلی نیشنل کانفرنس یا پی ڈی پی اقتدار میں آہی نہیں سکتی اس لئے دونوں پارٹیوں کو کانگریس اپنے ساتھ اقتدار میں رکھنا ضروری ہے اس لئے ہر کسی پارٹی کے ساتھ کانگریس کا اقتدار میں رہنے سے کانگریس روز بروز مضبوط ہونے والی ہے۔