خبریں

مذاکرات کا تماشہ بنادیا

مذاکرات کا تماشہ بنادیا

پاکستان کے ساتھ مذاکرات کی منسوخی پر طویل خاموشی توڑتے ہوئے وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ بھارت اس بات سے زبردست مایوس ہوا کہ علیحدگی پسند وں کے ساتھ میٹنگ کرکے پاکستان نے باہمی مذاکرات کو تماشہ بنانے کی کوشش کی۔ تاہم انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ پرامن اور دوستانہ تعلقات کی استاری کیلئے کوششیں جاری رہیں گی۔ مستقبل کے مذاکرات کیلئے پیش گی شرط پیش کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ بامعنی باہمی مذاکرات کیلئے تشدد اور دہشت گردی سے پاک ماحول لازمی ہے۔ مودی نے کہا ’’بھارت پاکستان کے ساتھ پرامن اور دوستانہ تعلقات کا خواہاں ہے، بھارت کو شملہ اور لاہور معاہدوں کے تحت دو طرفہ فریم ورک کے اندر پاکستان کے ساتھ کسی بھی تنازعہ پر بات چیت کرنے میں کوئی اعتراض نہیں ہے‘‘۔ خارجہ سیکریٹری مذاکرات کی منسوخی کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں مودی نے کہا ’’ہم اس بات پر مایوس ہوئے کہ پاکستان نے ہماری کوششوں کو تماشہ بنانے کی کوشش کی اور خارجہ سیکریٹریوں کی ملاقات سے عین قبل نئی دلی میں جموں وکشمیر کے علیحدگی پسند عناصر کے ساتھ بات چیت کی‘‘۔ مودی نے تاہم کہا کہ ہم پاکستان کے ساتھ پرامن دوستانہ تعلقات کی استواری کیلئے اپنی کوششیں جاری رکھیں گے۔ وزیراعظم نے یاد دلایا کہ مئی میںان کی تقریب حلف برداری میں پاکستانی وزیراعظم نواز شریف کی شرکت کے وقت دو وزرائے اعظم کے درمیان خوشگوار ملاقات ہوئی۔ مودی نے کہا ’’ہم دونوں نے مل کر یہ فیصلہ لیا کہ خارجہ سیکریٹریوں کو ملنا چاہئے تاکہ وہ تعلقات کو آگے لے جانے کیلئے راہیں تلاش کرسکیں‘‘۔