اداریہ

مین سٹریم حریت میں شامل ہو جائیں

مین سٹریم حریت میں شامل ہو جائیں
الیکشن عمل کو بے سود قرار دیتے ہوئے حریت (ع) چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے ہند نواز سیاسی جماعتوں کو مشورہ دیا کہ وہ اس عمل سے توبہ کریں اور حریت کی صفوں میں شامل ہو جائیں۔ جمعتہ الوداع کے موقعے پر جامع مسجد میں ایک عوامی بھاری اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے میر واعظ نے کہ اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے اصل حیثیت پر الیکشن یا دیگر کوئی انتظامی عمل ہر گز اثر انداز نہیں ہو سکتا اس لئے اگر ہند نواز سیاسی جماعتیں مسئلہ کشمیر کے حل کے حوالے سے ذرا بھی سنجیدہ ہیں تو انہیں فوری طور الیکشن جیسے لاحاصل عمل سے کنارہ کش ہوکر حریت کی صفوں میں شامل ہوجانا چاہئے۔ انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ حریت اقتدار پسندانہ سیاست کے پیچھے نہیں بلکہ اصول پرست سیاست کی علمبردار ہے اور حصول مقصد تک کسی بھی طور رکنے یا تھکنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ جمعتہ الوداع کی تقریب پر جامع مسجد میں عوام سے خطاب کرتے ہوئے میر واعظ نے کہاکہ کشمیر ایک سیاسی مسئلہ ہے اور اس مسئلہ کو سیاسی طور حل کئے بغیر خطے میں پائیدار امن کی ضمانت فراہم نہیں کی جاسکتی ہے۔ حریت (ع)چیئرمین نے کہا کہ کشمیر کشمیریوں کا ہے اور بھارت اور پاکستان کے درمیان مسئلہ کشمیر کے حوالے سے کوئی بھی مذاکراتی عمل کشمیریوں کی شمولیت کے بغیر نہیں ہوسکتا۔حریت چیئرمین نے کہا کہ حریت مسئلہ کشمیر کے حل کے حوالے سے ایک بامعنی مذاکراتی عمل شروع کرنے کی پہل کرتے ہوئے دونوں ممالک کے وزرائے اعظم کو خطوط روانہ کریگی جس میں ان پر زور دیا جائیگا کہ اگر وہ مسئلہ کشمیر کے ضمن میں ایک بامعنی مذاکراتی عمل کا آغاز کرتے ہیں تو حریت کانفرنس اس میں اپنا بھر پور تعاون پیش کرنے کیلئے تیار ہے۔حریت چیئرمین نے کہا کہ بدلتے عالمی سیاسی حالات میں طاقت کے بل پر مسائل کو حل کرنے کے بجائے مذاکراتی عمل کا راستہ اختیار کیا جارہا ہے اور جس کی تازہ مثال افغانستان اور فلسطین جیسے پیچیدہ مسائل کے حل کیلئے مذاکراتی عمل کا آغاز ہے