خبریں

پارلیمانی چنائو لڑنے سے انکار

پارلیمانی چنائو لڑنے سے انکار

ریاست کے کسی بھی پارلیمانی حلقہ سے انتخاب لڑنے کو خارج از امکان قرار دیتے ہوئے مرکزی وزیر صحت غلام نبی آزاد نے کہا ہے کہ ریاست میں پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کا پارلیمانی انتخاب میں امیدوار اتارنا فضول جائے گا کیونکہ اس پارٹی کا قومی سیاست میں کوئی رول نہیں اور نہ ہی یہ پارٹی ملک کی پالیسی بنانے میں کوئی کردار اداکرسکتی ہے۔ آزادنے نریندر مودی کووزیرا عظم کیلئے کمزور امیدوار قرار دیا اور کہا کہ جموں کشمیر سے بھاجپا خالی ہاتھ واپس لوٹے گی اور ریاست میں کانگریس و نیشنل کانفرنس اتحاد کے تمام امیدوار کامیابی حاصل کریںگے۔ ان کا کہنا تھا کہ راجوری پونچھ کو میڈیکل کالج مل گیاہے جس پر وہ عوام کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ آزاد نے کہاکہ ان کے بارے میں چنائو لڑنے کی افواہوں میں سچائی نہیں ہے کیونکہ ان کو پارٹی نے تمام حلقوں کی ذمہ داری دی ہے اسلئے وہ کسی بھی حلقہ سے چنائو نہیں لڑرہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر وہ خود چنائو لڑتے ہیں تو پھر انہیں ایک ہی حلقہ تک اپنی مہم محدود کرنا پڑے گی جبکہ پارٹی چاہتی ہے کہ وہ تما م حلقوں کیلئے مہم چلائیں۔ پی ڈی پی کی جانب سے پارلیمانی انتخابات میں حصہ لینے کو فضول قرار دیتے ہوئے آزاد نے کہاکہ چاہے وہ پی ڈی پی ہو یا بھاجپا، اس ریاست سے ان پارٹیوں کو کوئی سیٹ نہیں ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی کا ویسے بھی ملکی سیاست میں کوئی رول نہیں اورنہ ہی یہ پارٹی قومی سطح پر کوئی تبدیلی لاسکتی ہے کیونکہ یہ ایک علاقائی پارٹی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جس طرح سے میڈیا نریندر مودی یا اروند کیجری وال کو بڑھاچڑھا کر پیش کررہاہے ،حقیقت میں اس طرح کی کوئی بات نہیں ہے۔ آزاد نے مودی کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ جس وزیراعظم امیدوار کو کہیں سے بھی چنائو لڑنے کی جگہ نہیں مل رہی ہو اوروہ کتنا طاقتور ہے اس کا اندازہ لوگوں کو بخوبی ہوجائے گا۔ ان کاکہناتھا146146میں منسٹریل امیدوار بھی نہیں ہوں لیکن مجھے درجنوں جگہوں سے چنائو لڑنے کی پیش کش آئی ہے اور نریندر مودی پرائم منسٹریل امیدوار ہے لیکن ان کو کوئی بھی جگہ انتخاب لڑنے کیلئے نہیں مل رہی ہے145145۔ انہوں نے اروند کیجری وال پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہاکہ ان پارٹیوں کا غبارہ خود پھوٹ جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ مغل روڈ کو اپنے کھاتے میں ڈالنا چاہتے ہیں ان کو یہ بات بھی معلوم ہے کہ یہ سڑک پرائم منسٹر ریکنسٹرکشن پروگرام کے تحت بنی ہے اور ان کے دور اقتدار میں شروع ہوکر مکمل ہوئی ہے۔ آزاد نے کہا کہ سروشکھشا ابھیان ان کی سرکار کی دین ہے جس کے تحت لاکھوں لوگوں کو نوکری ملی ہے جبکہ4سال میں محکمہ صحت کو انہوں نے آسمان پر پہنچادیاہے۔ انہوں نے کہا کہ میڈیکل کالجوں میں ڈاکٹروں کی 60فیصد اور ایم ڈی کی80فیصد نشستیں بڑھا دی گئی ہیں جس سے نوجوانوں کو اس سیکٹر میں کام کرنے کا موقعہ ملے گا۔ ریاستی حکومت کی کارکردگی کی ستائش کرتے ہوئے آزاد نے کہا کہ نئے انتظامی یونٹوں کا قیام تاریخی فیصلہ ہے اور اس کا کریڈیٹ یہاں کی سرکار کو جاتا ہے۔