اداریہ

پی ڈی پی کیلئے اب امتحان!

بی جے پی پی ڈی پی سرکار کو اب بنے ہوئے پندرہ دن ہوئے ہیں۔بی جے پی کے ساتھ الائنس کرنے کے لئے اگرچہ پی ڈی پی کو عوام میں ناراضگی ہوئی ہے تاہم مخلوط سرکار کے سربراہ اور پی ڈی پی سرپرست وزیراعلیٰ مفتی محمد سعید نے عوام کی ناراضگی دور کرنے کے لئے شروع سے ہی کچھ ایسے بیانات دئے جن سے عوام میں ناراضگی دور کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔مفتی محمد سعید نے وزیراعلیٰ بننے کے پہلے ہی روز ایک پریس کانفریس میں ریاست میں پُر امن انتخابات کرانے کا سہرا پاکستان، علیحدگی پسندوں اور جنگجوئوں کو دیا۔ جس پر کافی ہنگامہ کھڑا کرنے کی کوشش کی گئی تاہم ملک کے وزیر اعظم اور وزیر داخلہ نے پارلیمنٹ میں اس مسئلے کو سنبھالا ۔ اس کے بعد مفتی محمدسعید کے ایک اور بیان کہ اُن کی سرکار تمام سیاسی قیدیوں کی رہائی عمل میں لائی جائے گی جن کے سنگین نوعیت کے الزامات نہیں ہیں۔ اس سلسلے میں پہلے آزمائشی طور پر علیحدگی پسند رہنما، مسلم لیگ کے  چیرمین مسرت عالم بھٹ کو رہا کیا گیا ۔ جس سے کافی شوروغل پیدا ہو گیا۔ ملک میں اپوزیشن نے سرکار کو گھیر لیا جس کے بعد پارلیمنٹ میں لگاتارمسرت عالم کی رہائی پر شورغل چل رہا ہے۔ تاہم مفتی محمد سعید نے اس بارے میں آگاہی دی کہ ریاست کی سرکار کو فیصلے لینے کا حق ہے۔ ایسے بیانات دینے سے پی ڈی پی کی ساکھ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ اس بارے میں عوامی حلقوں کی رائے ہے کہ اگر مفتی محمد سعید بے شک سیاسی قیدیوں کی رہائی کے حق میں ہیں تو پھر پہلے اُن قیدیوں کی رہائی عمل میں لائی جانی چاہیے جو غیر معروف تھے تاہم سب سے پہلے معروف علیحدگی پسند کی رہائی کو ہی کیوں عمل میں لایا گیا۔اس لحاظ سے عوامی حلقوں میں بھی سوالات کھڑے ہو رہے ہیں۔ لیکن جو بھی ہو مفتی محمد سعید نے کشمیریوں کے تئیں کچھ ایسے بیانات دینے شروع کئے جو حقیقت میں کشمیریت کو زندہ رکھ سکتے ہیں۔ ادھر مفتی محمد سعید اور اُن کی پارٹی کے لئے امتحان اس وقت شروع ہوگا جب اسمبلی ممبر لنگیٹ انجینئر رشید محمد افضل گورو کی باقیات کی واپسی کے لئے بل اسمبلی میں لائے گی جس کی کئی پی ڈی پی ممبران اسمبلی نے پہلے ہی حمایت کی ہے۔ ایک طرف بی جے پی افضل گورو کی باقیات کی واپسی کے مخالف ہیں تو دوسری طرف کانگریس کے کئی اسمبلی ممبران کے علاوہ پی ڈی پی کے کئی اسمبلی ممبران نے اس بارے میں پہلے ہی اپنی پوزیشن واضح کی ہے کہ وہ افضل گورو کی باقیات کی واپسی کے لئے انجینئر رشید کی حمایت کریں گے اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا پی ڈی پی سرپرست مفتی محمد سعید انجینئر رشید کی یہ بل کامیاب کرانے میں کامیاب ہوگا اگر ہوگا تو بیشک مفتی محمد سعید کی پارٹی کے تئیں عوام کی ہمدردیاں بڑ جائیں گی اور اگر بی جے پی نے اس بل کو پاس ہونے نہیں دیا تو پی ڈی پی کا اس وقت کیا موقف ہوگا ، یہی تو پی ڈی پی کیلئے امتحان کی گڑی ہوگی ۔