خبریں

16مارچ سے موسم میں بہتری کی اُمید
14اور15مارچ کومزید بارشوں کا امکان

وادی میںمسلسل 4دنوں تک برف وباراں کاسلسلہ جاری رہنے کے بعدسنیچر کے روز موسم مجموعی طورپرخشک رہا۔تاہم گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران گلمرگ ،پہلگام اورکپوارہ میں ہلکی برف باری اوربارشیں ہوئیں جبکہ سری نگر، قاضی گنڈ،کوکرناگگ اوردیگرکچھ علاقوں میں بھی دوران شب ہلکی بارشیں ہوئیں۔موسلادار بارشوں سے دریائے جہلم اوراسکے معاون ندی نالوں میں پانی کی سطح میں تیزی کیساتھ اضافہ ہوا ،تاہم پانی کی سطح خطرے کے نشانات سے ابھی کافی نیچے ہے ،جس کودیکھتے ہوئے محکمہ آبپاشی وسیلاب کنٹرول کشمیر نے پہلے ہی واضح کیاہے کہ کشمیر میں سیلاب کاکوئی خطرہ نہیں ہے ۔بارشوں اوربر ف باری کاسلسلہ تھم جانے کے باوجود محکمہ موسمیات نے آج یعنی14مارچ اورکل یعنی15مارچ کومزید بارشیں ہونے کی پیشگوئی کرتے ہوئے پھرکہاہے کہ16مارچ سے موسمی صورتحال بہتررہنے کی امید ہے۔میدانی علاقوں میں متواتر چاردنوں تک درمیانہ تاموسلا داربارشیں اوربالائی علاقوں میں ہلکی تابھاری برف باری ہونے کے بعدسنیچر کوصبح سے ہی کشمیروادی میں موسم بہتر رہا،اورکسی بھی جگہ سے تازہ برف باری یابارش ہونے کی کوئی اطلاع نہیں ملی۔ تاہم گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران گلمرگ ،پہلگام اورکپوارہ میں ہلکی برف باری اوربارشیں ہوئیں جبکہ سری نگر، قاضی گنڈ،کوکرناگگ اوردیگرکچھ علاقوں میں بھی دوران شب ہلکی بارشیں ہوئیں۔محکمہ موسمیات کے مطابق گلمرگ میں دوران شب 9.4ملی میٹر بارش اور2سینٹی میٹر برف باری ہوئی جبکہ پہلگام میں 17.4ملی میٹر بارش اور6.5سینٹی میٹر برف باری ہوئی ،اورکپوارہ میں دوران شب15.2ملی میٹر بارش اور2سینٹی میٹر تازہ برف باری ہے ۔محکمہ موسمیات کے مطابق اس دوران سری نگرمیں 9ملی میٹر ،قاضی گنڈمیں30.8ملی میٹر اورککر ناگ میں21.2ملی میٹر تک تازہ بارش ہونے کی اطلاعات ملیں ۔
اُدھر موسلادار بارشیں ہونے کے بعددریائے جہلم میں پانی کی سطح میں تیزی کیساتھ اضافہ ہواہے تاہم یہ سطح خطرے کے نشانات سے ابھی کافی نیچے ہے ۔محکمہ آبپاشی وسیلاب کنٹرول کشمیرکی آفیشل ویب سائٹ پردستیاب معلومات کے مطابق سنیچر کوصبح 9بجے سنگم بجبہاڑہ میں دریائے جہلم میں پانی کی سطح 7.62فٹ درج کی گئی جبکہ یہاں خطرے کانشان18فٹ اورسیلابی صورتحال پیداہونے کانشان21فٹ رکھاگیا ہے۔اسی طرح سے سنیچرکی صبح رام منشی باغ سری نگرکے مقام پرجہلم میں پانی کی سطح 10.45فٹ درج کی گئی تھی ،جوخطرے کے نشان سے کئی فٹ نیچے ہے کیونکہ یہاں خطرے کانشان16فٹ اورسیلابی صورتحال پیداہونے کانشان18فٹ رکھاگیا ہے۔
اُدھر ضلع بانڈی پورہ کے عشم سونہ واری علاقہ میں سنیچرکی صبح دریائے جہلم میں پانی کی سطح 5.32فٹ ریکارڈکی گئی جبکہ یہاں خطرے اورسیلابی صورتحال پیداہونے کانشان 14فٹ رکھاگیا ہے ۔
محکمہ اری گیشن اینڈ فلڈکنٹرول یعنی آبپاشی وسیلاب کنٹرول محکمہ کشمیر کے ذرائع نے بتایاکہ حالیہ چاردنوںکی مسلسل بارشوں کے بعد نالہ ویشو واقع کولگام ،نالہ لدر واقع پہلگام اورنالہ رنبیار واقع شوپیان میں جمع ہوا اضافی پانی چونکہ جہلم کارُخ کرگیاہے ،اسلئے دریائے جہلم میں کم پیمانے کااُبال نظرآتاہے، تاہم یہ اضافی پانی جلد ہی بہے گا،اورجہلم میں پانی کی سطح پھر معمول پرآجائیگی یاکئی فٹ کم ہوجائے گی ۔محکمہ آبپاشی وسیلاب کنٹرول کے ایک سینئر انجینئر نے کہا کہ جمعرات اورجمعہ کے روز چونکہ بارشوں کازیادہ زور شمالی کشمیر میں ہی رہا،اسلئے دریائے جہلم میں طغیانی یاسیلابی صورتحال کاامکان یاخطرہ پیدانہیں ہوا۔
ماہرین نے محکمہ آبپاشی وسیلاب کنٹرول کشمیر کے سینئرانجینئروں کی بات یادلیل کیساتھ اتفاق کرتے ہوئے کہاکہ اگرحالیہ دنوں میں شمالی کشمیر کے بجائے جنوبی کشمیر میں زیادہ بارشیں ہوتیں تودریائے جہلم میں اُبال یاطغیانی آنے کااندیشہ لاحق رہتا۔انہوں نے تاہم خبردارکیاکہ آنے والے دنوں میں اگر جنوبی کشمیر میں زیادہ یاموسلادار بارشیں ہوئیں تو جنوبی کشمیر میں واقع سبھی ندی نالوں بالخصوص نالہ ویشو،لدرنالہ اورنالہ رنبیارمیں طغیانی آسکتی ہے اوران ندی نالوں کے اضافی پانی کے آنے سے جہلم میںاُبال کی صورتحال پیداہوسکتی ہے ۔ماہرین نے اپنی اس بات کیساتھ یہ دلیل بھی جوڑی کہ آنے والے دنوں میں جب درجہ حرارت بڑھ جانے کے بعدجنوبی کشمیر میں واقع پہاڑوں اورجنگلوں میں جمع برف پگلنا شروع ہوجائیگی توندی نالوں اوردریائے جہلم میں پانی کی سطح میں تیزی کیساتھ اضافہ ہوسکتاہے اوریکایک آنے والا یہ اضافی پانی دریائے جہلم میں طغیانی کی صورتحال کاموجب بن سکتاہے۔
اس دوران محکمہ موسمیات نے کہاکہ وادی کشمیر میں چار دنوں کے برف و باراں کے بعد موسم میں بہتری واقع ہوئی ہے اور شبانہ درجہ حرارت میں بھی اضافہ درج ہوا ہے۔ محکمہ موسمیات کے ایک ترجمان کے مطابق وادی میں14 اور 15 مارچ کو موسم ایک بار کروٹ بدل سکتا ہے جس کے باعث میدانی علاقوں میں موسلا دھار بارشیں جبکہ بالائی علاقوں میں ہلکی برف باری ہوسکتی ہے۔ترجمان کے مطابق موسم میں16مارچ سے بہتری واقع ہونے کا امکان ہے۔