سرورق مضمون کالم کی خبریں

کورونا کاقہر:ہسپتالوں میں آکسیجن کی کمی سے ہاہاکار
پانچ ریاستوں میں انتخابات کا عمل مکمل

01 May 2021 کو شائع کیا گیا

کورونا وائرس کی لہر کا قہر جاری ہے ۔ روزانہ مریضوں کی تعداد چار لاکھ تک پہنچ گئی ۔ یہ تعداد تین لاکھ سے نیچے آنے کا نام ہی نہیں لیتا ہے ۔ اس وجہ سے عوام میں سخت خوف کا ماحول پایا جاتا ہے ۔ کئی ریاستوں میں ایک یا دو ہفتے کے لاک ڈاون کا نفاذ عمل مزیدپڑھیں

کورونا نے ایک بار پھر ملک کو مفلوج کردیا

24 Apr 2021 کو شائع کیا گیا

ورونا کا قہر جاری ہے اور پوری دنیا میں اس پر سخت تشویش پائی جاتی ہے ۔ ہندوستان بھر میں اس حوالے سے عجیب و غریب صورتحال پائی جاتی ہے ۔ ایک طرف کئی لاکھ لوگ وائرس سے متاثر بتائے جاتے ہیں ۔ دوسری طرف بڑے پیمانے پر سیاسی سرگرمیاں جاری ہیں ۔ مغربی بنگال میں سیاسی جلسوں میں لوگ بڑی تعداد میں شریک ہورہے ہیں ۔ اطلاعات کے مطابق حال ہی میں وزیراعظم اور وزیرداخلہ نے بنگال میں کئی الیکشن ریلیوں سے خطاب کیا ۔ اس موقعے پر وہاں ان کے مزیدپڑھیں

کشمیر پر خفیہ مذاکرات کا انکشاف
کووڈ 19 کااثر ، جموں سے سرینگر دربار منتقلی ملتوی

17 Apr 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
ایک معتبر خبر رساں ادارے نے انکشاف کیا ہے کہ دہلی اور اسلام آباد کے درمیان کشمیر پر حال ہی میں مذاکرات ہوئے ہیں ۔ خبر رساں ادارے رائٹرز نے اس حوالے سے کہا کہ اسے دبئی میں دونوں ملکوں کے انٹلی جنس حکام کے درمیان ہوئی بات چیت کا پتہ چلا ہے ۔ اس بات چیت کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ مزیدپڑھیں

کورونا کی نئی لہر سے صورتحال تشویشناک
جموں کشمیر میں اسکول بند ، رات کا کرفیو نافذ

11 Apr 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
پورے ملک میں کورونا کی لہر نے سخت خوف وہراس پیدا کیا ہے ۔ متاثرین کی تعداد بڑی تیزی سے بڑھ رہی ہے ۔ ویکسین دینے کی مہم میں تیزی لائی جارہی ہے ۔ اس دوران ماہرین نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا ہے کہ کورونا مزیدپڑھیں

مودی عمران دوستی!!!
کس کے کہنے پرجھکے دو ایٹمی پاور؟

05 Apr 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
ایشیا کے دو روایتی حریف ہندوستان اور پاکستان ایک بار پھر ایک دوسرے کے دوست بن رہے ہیں ۔ عمران مودی دوستی کی نئی لہر نے مبصرین کو حیران کیا ہے ۔ اس حوالے سے لوگ شش وپنج میں ہیں کہ دوستی کی یہ نئی لہر اچانک کیسے پیدا ہوگئی ۔ دونوں ملکوں کے باہمی تعلقات میں سخت کشیدگی پائی جاتی تھی ۔ پلوامہ بم دھماکے کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان جنگ ہوتے ہوتے رہ گئی۔ مزیدپڑھیں

ہند پاک خوش آئند تعلقات کے بیچ
سرینگر میں ملی ٹنٹ حملہ ، لشکر طیبہ کے ملوث ہونے کا خدشہ

28 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
سرینگر کے مضافات میں ملی ٹنٹوں کی طرف سے جمعرات کو کئے گئے حملے میں سی آر پی ایف کے دو اہلکار مارے گئے اور تین کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے ۔ اس حملے کی ابھی تک کسی بھی جنگجو تنظیم نے ذمہ داری قبول نہیں کی ۔ تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ لشکر طیبہ کی طرف سے کیا گیا ۔ ان کا کہنا ہے کہ پولیس اس واقعے کی جانچ میں لگی ہوئی ہے اور بہت جلد حملہ آوروں کی مزیدپڑھیں

پارلیمنٹ میں کشمیر بجٹ پر اپوزیشن کا شدید ردعمل
ماضی کو چھوڑ کر آگے بڑھنے کی ضرورت/باجوا

20 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
وزیرمالیات نے بدھ وارکو پارلیمنٹ میں کشمیر کا بجٹ پیش کرتے ہوئے حکومت کے ترجیحی پروجیکٹوں کا اعلان کیا ۔1.80 لاکھ کروڑ پر مشتمل اس بجٹ کو اب تک کا سب سے بڑا بجٹ قرار دیا گیا ہے ۔ اس حوالے سے کہا گیا کہ بجٹ کا بڑا حصہ تعمیر و ترقی کے کاموں پر صرف ہوگا ۔ اس کے علاوہ مزیدپڑھیں

ڈی ڈی سی ممبران کا جموں میں احتجاج

13 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
سیکورٹی فورسز کا کہنا ہے کہ عسکری تنظیم البدر کے چیف کمانڈر غنی خواجہ کی ہلاکت ان کے لئے ایک بڑی کامیابی ہے ۔ خواجہ کشمیر میں موجود جنگجووں میں مطلوب ترین جنگجو تھے۔ باقی تنظیموں کے اعلیٰ کمانڈروں کی مسلسل ہلاکت کے بعد اب غنی خواجہ ایسے واحد کمانڈر تھے جو فورسز کے ہاتھ نہیں آرہے تھے ۔ منگل وار کو تجر شریف سوپور میں حفاظتی دستوں کے ساتھ تصادم میں خواجہ مارا گیا ۔ اس حوالے سے دئے گئے مزیدپڑھیں

دہلی کی لڑائی جموں کشمیر کے اکھاڑے میں

06 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
کانگریس کے 23 لیڈروں نے جموں میں ایک عوامی جلسہ منعقد کیا۔ نہرو گاندھی خاندان سے ناراض اس گروپ نے جو G23 کے نام سے جانا جاتا ہےکو جموں میں آکر اپنی سرگرمیوں کا آغاز کیا ۔ اس گروپ کی قیادت کانگریس کے کئی لیڈر کررہے ہیں ۔ ان میں غلام نبی آزاد خاص طور سے نمایاں ہیں ۔ اس گروپ نے کئی ماہ پہلے کانگریس لیڈر شپ کو ایک خط لکھ کر جس میں پارٹی سیاست کے حوالے سے سخت تنقید کی گئی تھی۔ کانگریس پارٹی مزیدپڑھیں

لائن آف کنٹرول پرپھر سے سیز فائر/
عالمی دبائو یا ٹریک ٹو کا نتیجہ ؟

27 Feb 2021 کو شائع کیا گیا

سرینگر ٹوڈےڈیسک
عوامی حلقوں میں اس بات پر خوشی کا اظہار کیا گیا جب ہندوپاک کی طرف سے جنگ بندی معاہدے پر سختی سے عمل کرنے کا اعلان کیا گیا ۔ جمعرات کو جب یہ خبر سامنے آئی کہ ہند پاک کے ڈائریکٹر ملٹری آپریشنزنے سرحد پر امن کی بحالی اور گولہ باری نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے تو لوگوں نے اطمینان کا سانس لیا ۔ سیاسی رہنمائوں نے اس اعلان پر خوشی کا اظہار کیا ہے ۔ این سی کے سربراہ فاروق عبداللہ نے امن معاہدے کو سراہا اور اسے مزیدپڑھیں