اداریہ کالم کی خبریں

منشیات اور کشمیر
کیا عام لوگ بر ی الذمہ ہیں ؟

10 Apr 2021 کو شائع کیا گیا

جموں و کشمیر پچھلے تیس پینتا لیس سال سے ایک غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہے ۔جموں و کشمیر میں اس مد ت کے دوران زندگی کے ہر شعبے میں تبدیلیاں وقوع پذیر ہو ئی ہیں اگرچہ تبدیلیوں کی ہیئت مختلف شعبوں کے لئے مختلف ہے ۔کسی شعبے میں ہو نے والی تبدیلی مثبت اثرات کی حامل ہے جبکہ کہیں پر منفی تبدیلیاں رونماہو ئی ہیں اور ان منفی نو عیت کی تبدیلیوں نے ہما رے سماج کے تا نے با نے کو بکھیر کر رکھ دیا ہے ۔آج سے تیس پینتیس سال کے کشمیر پر اگر نظر دوڑائی مزیدپڑھیں

کورونا وائرس کے پھیلائو میں اچھال
عام لوگوں کے ساتھ ساتھ حکو مت بھی ذمہ دار

05 Apr 2021 کو شائع کیا گیا

ھا رت بھر کے ساتھ ساتھ جموں وکشمیر کے اندر بھی پچھلے کم و بیش ایک ما ہ سے کو رونا وائرس کے یو میہ سامنے آنے والے معاملات میں رفتہ رفتہ ہی سہی مگر اضافہ درج کیا جا رہا ہے اور اپریل کے اوائل تک اس مہلک وائر س کے پھیلائو میں تشویشناک اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے ۔بھا رت میں سنیچر کو سامنے آنے والے معاملات نوے مزیدپڑھیں

وادی میں سیاحت اور روزگار

28 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

خدا کی قدرت کے حسین نظاروں کو تحریر کرنا ہمارے بَس میں نہیں۔ ان خوبصورت نظاروں کو صرف محسوس ہی کیا جاسکتا ہے اور محسوس کرکے دل سے بےاختیار اللہ کے حمد و ثنا ہی کیا جاسکتا ہے۔ایشیاء کا سب سے بڑا اور دل کو معطر کرنے والا باغ ’باغ گل لالہ‘آج کل سیاحوں کےلئے کھلا ہے اور ملک کے ساتھ ساتھ مقامی سیاحوں کا باغ کی طرف خاصا رش دیکھنے کو مل رہا ہے۔ یقینی طور پر اس باغ کے کھل جانے سے وادی میں سیاحت کو تقویت مل رہا ہے اور زیادہ سے زیادہ سیاحت وادی کے لئے خوش شگون مانا جاتا ہےکیونکہ باغ میں سیاحوں کےسیرپر آنے سے مزیدپڑھیں

سیاست میں سب کچھ جائز

20 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

کہتے ہیں سیاست میں سب کچھ جائز ہے ۔ اس پر دھیرے دھیرے جموں کشمیر کےہر کسی شخص کوتجربہ ہو رہا ہے کیونکہ آئے دن اس طرح کی خبریں گشت کر رہی ہے جس سے خاص تو خاص عام لوگ بھی اب واقف ہو رہے ہیں۔ یہ بات بہت پرانی ہوچکی ہے کہ محبت اور جنگ میں سب کچھ جائز ہے۔ اب بات بدل کر یہ بن چکی ہے کہ سیاست میں سب کچھ جائز ہے کہ اب سیاست ہی محبت ہے اور سیاست ہی جنگ ہے۔ ہم ہر طرف سے سیاسی جنگ میں مبتلا ہیں اور سیاستدان عوام سے سیاسی محبت کے دعوے کرتے پھر رہے ہیں۔ اس دور میں بھی یہ عوام اپنے سیاستدانوں کی ہر مزیدپڑھیں

تعلیمی شعبے میں سدھار کیسے؟

14 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

آج کل تعلیم و تربیت حاصل کرنا بہت مشکل بن رہا ہے۔ کورونا کے چلتے آئے روز کچھ نہ کچھ تبدیلیاں ضرور آتی ہے،جس سے تعلیم حاصل کرنے والے بچے اور بچیوں کو بے حد نقصان کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ایسے میں سرکار بھی یہ واضح کرنے میں ناکام ہے کہ آیا زیر تعلیم بچوں کو اپنے اپنے سکولوں کو جانے کی اجازت دی جائے یا نہیں۔
حالانکہ تعلیمی شعبے میںسدھارکی باتیںبڑے پیمانے پر ہورہی ہیںاور متعدد منصوبے مرتب بھی کیے جارہے ہیں۔ مگر افسوس عملی طور پر سب ٹھائیں ٹھائیں فش نظر آرہا ہے ۔ کہا جاتا ہے کہ ’تعلیم کا مقصد انسان کو مزیدپڑھیں

سب کچھ پہلے جیسا نہ ہوا !

06 Mar 2021 کو شائع کیا گیا

۲۰۱۹ کے آخری ایام میں ووہان چین سے شروع ہونے والے وبا کے سفر نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے۔ سب کے معمولات بدل گئے ہیں، گھر کی اہمیت بڑھ گئی ہے۔ زندگی آن لائن ہوگئی ہے۔ عندیہ اور نظریہ یہی ہے کہ اس سال بھی وائرس کا پھیلائو ختم نہیں ہو رہا ہے۔ شاید پورے کائنات میں بچے اپنی مائوں سے پوچھ رہے ہوں گے کہ کیا اب کبھی پہلے جیسا نہیں ہوسکے گا؟ حالانکہ آج سے ٹھیک دو تین ماہ پہلے ایسا لگ رہا تھا کہ سب کچھ پہلے جیسے ہونے جا رہا ہے مگر اب حالات پھر سے بدلنے لگے اور یہی خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ سب کچھ پہلے مزیدپڑھیں

قیمتیں قابو سے باہر،انتظامیہ بے بس

27 Feb 2021 کو شائع کیا گیا

وادی میں ان دنوں گوشت نایاب ہے اور لوگوں کا قصابوں پر من مانی قیمتوں پر گوشت فروخت کرنے کا الزا م بھی ہے تاہم انتظامیہ کی جانب سے گوشت کی نرخیں مقرر کرنے کے بعد بازاروں سے غائب قصاب پوشیدہ جگہوں پر گوشت کو فروخت کرنے میں ہی مصروف ہیں۔قصابوں کو جوابدہ بنانے اور سرکاری نرخ ناموں کی خلاف ورزی کی پاداش میں تادیبی کارروائی عمل میں لانے کے ساتھ ہی وادی میں گوشت نایاب ہوگیا ہے۔قصبوں اور دیگر بازاروں میں اکثر قصابوں کی دکانیں بند ہیںجبکہ مرغ، گوشت اور سبزیوں کے نرخوں میں مزیدپڑھیں

اسکولوں کا کھلنا بے حد ضروری

20 Feb 2021 کو شائع کیا گیا

اسکولوں میں تعلیمی سرگرمیاں تقریباً دو برسوں سے معطل ہیں اس لحاظ سے بچوں کا تعلیمی نظم و ضبط متاثر ہوئے بنانہیں رہ سکا۔حقیقی معنوں میں دیکھا جائے تو ۲۰۰۸ سے ہی کشمیر میں تعلیمی نظام متاثر رہا ۔۲۰۰۸ کی ایجوٹیشن کے بعد ۲۰۱۰ اور پھر ۲۰۱۶ کی ایجوٹیشنوں سے تعلیمی نظام کافی حد تک متاثر رہا تاہم اگرچہ ۲۰۱۷ کے بعد سے تعلیمی نظام معمول پر آنے لگا مگر ۲۰۱۹ کے وسط یعنی اگست ۲۰۱۹ کے ابتدا میں ہی تمام تعلیمی سرگرمیاں مکمل طور بند کرنی پڑی۔ جب مرکزی سرکار نے دفعہ ۳۷۰ کی منسوخی عمل میں لائی اور آنا فاناً کشمیر میں تمام کاروباری مزیدپڑھیں

قدرتی آفات سے نمٹنے کےلئے جموں کشمیر کتنی تیار

16 Feb 2021 کو شائع کیا گیا

جموں وکشمیر میں آئے زلزلے نے ایک بار پھر لوگوں کے ذہنوں میں یہ سوال پیدا کیا ہے کہ جموں کشمیر جو سالہاسال سے قدرتی آفات سے جھوج رہی ہے۔ زلزلے جیسی قدرتی آفت سے جھوجھنے کے لئے تیار ہے۔ جموں کشمیر ایک انتہائی خطرناک سسمک زون میں آتی ہے اور ماہرین ہمیشہ اس بات کی دہائی دیتے آئے ہیں کہ یہاں مستقبل میں ایک بڑے زلزلے کا امکان ہے لہٰذا مستقبل میں اس طرح کے زلزلے یا دوسری طرح کی کسی قدتی آفت سے نپٹنے کےلئےسرکاری اور سماجی سطح مزیدپڑھیں

قدرتی آفات سے نمٹنے کےلئے جموں کشمیر کتنی تیار

14 Feb 2021 کو شائع کیا گیا

جموں وکشمیر میں آئے زلزلے نے ایک بار پھر لوگوں کے ذہنوں میں یہ سوال پیدا کیا ہے کہ جموں کشمیر جو سالہاسال سے قدرتی آفات سے جھوج رہی ہے۔ زلزلے جیسی قدرتی آفت سے جھوجھنے کے لئے تیار ہے۔ جموں کشمیر ایک انتہائی خطرناک سسمک زون میں آتی ہے اور ماہرین ہمیشہ اس بات … مزیدپڑھیں